ملک میں بجلی بحران برقرار، 18 گھنٹوں کی لوڈ شیڈنگ سے زندگی اجیرن

ملک میں بجلی کا شارٹ فال 7 ہزار 477 میگاواٹ ہے، ذرائع توانائی ڈویژن

وزیر اعظم شہباز شریف سمیت تمام وزرا کے دعوؤں کے برعکس ملک میں بجلی کا بحران جاری ہے اور کئی علاقوں میں بجلی کی لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ 15 سے تجاوز کرگیا ہے۔

توانائی ڈویژن کے ذرائع کے مطابق بجلی کی مجموعی پیداوار 21 ہزار 223 طلب 28 ہزار 700 میگاواٹ ہے، اس طرح ملک میں بجلی کا شارٹ فال 7 ہزار 477 میگاواٹ ہے۔

بجلی کی پیداوار

ہفتے کے روز پانی سے 5 ہزار 500 میگاواٹ، نجی بجلی گھروں سے 11 ہزار میگاواٹ، جوہری ایندھن سے 2 ہزار 291 میگاواٹ، سرکاری تھرمل پلانٹس سے ایک ہزار 290 میگاواٹ، ونڈ پاور پلانٹس سے 900 میگاواٹ، شمسی توانائی سے 122 ميگاواٹ اور بگاس سے چلنے والے پلانٹس سے 120 میگاواٹ پیدا کی جارہی ہے۔

اسلام آباد

پاور ڈویژن کے ذرائع کے مطابق آئیسکو ریجن میں بجلی کا شارٹ فال 450 میگاواٹ تک ہے، جس کی وجہ سے شہری علاقوں میں 6 گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ کی جارہی ہے جب کہ نواحی اور دیہی علاقوں میں لوڈشیڈنگ کا دورانیہ زیادہ ہے۔

پنجاب میں 16 گھنٹے بجلی غائب

پنجاب کے دارالحکومت لاہور سمیت صوبے کے وسطی علاقوں میں اعلانیہ اور غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ 3 سے 14 گھنٹے تک ہے۔

لیسکو ذرائع کے مطابق اس وقت بجلی کی طلب 5 ہزار میگا واٹ جب کہ رسد 4 ہزار 300 میگا واٹ ہے، اس طرح بجلی کا شارٹ فال 700 میگا واٹ ہے۔

ملتان سمیت جنوبی پنجاب میں صورت حال زیادہ خراب ہے، جہاں شہروں میں 10 سے 12 جب کہ دیہی علاقوں میں بجلی کی بندش کا دورانیہ 16 گھنٹے تک پہنچ گیا ہے۔

خیبر پختونخوا

پیسکو ترجمان کے مطابق بجلی کی طلب 3 ہزار 440 میگاواٹ جب کہ فراہمی صرف ایک ہزار 590 میگاواٹ ہے۔

خیبر پخنخوا کے شہری علاقوں میں اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ 8 گھنٹے تک ہے جب کہ دیہی علاقوں میں 12 سے 16 گھنٹے بجلی غائب رہتی ہے۔

کراچی

ملک کا سب سے بڑا شہر اور معاشی حب بھی بجلی کی لوڈ شیڈنگ کا عذاب جھیل رہا ہے۔

کے الیکٹرک ذرائع کے مطابق شہر میں بجلی کا شارٹ فال 350 میگا واٹ تک ہے جس کی وجہ سے لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ 5 سے 16 گھنٹوں کے درمیان ہے۔

چند ہفتوں پیشتر جو علاقے لوڈ شیڈنگ سے مستثنیٰ تھے وہاں بھی کم از کم 5 گھنٹے لوڈ شیڈنگ کی جارہی ہے جب کہ دیگر علاقوں میں عوام کو 12 سے 15 گھنٹے بجلی کی بندش کا سامنا ہے۔

سندھ کی صورت حال

لوڈ شیڈنگ کے عفریت سے سندھ کے دیگر علاقوں کو بھی بری طرح جکڑا ہوا ہے۔ حیدر آباد اور دیگر شہروں میں لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ 8 گھنٹے تک ہے لیکن قصبات اور دیہات میں 14 گھنٹے تک بجلی کی بندش معمول کی بات بن گئی ہے۔

بلوچستان

رقبے کے لحاظ سے سب سے بڑا صوبہ بجلی کی لوڈ شیڈنگ سے بھی سب سے زیادہ متاثر ہے۔ بلوچستان میں بجلی کی ترسیل کے ادارے کیسکو کے ذرائع کا کہنا ہے کہ بلوچستان میں بجلی کی کھپت 2200 میگا واٹ ہے لیکن بجلی کی فراہمی صرف 500 میگاواٹ ہے۔ اس طرح شارٹ فال 1700 میگاواٹ ہے۔

طلب اور رسد میں بہت بڑے فرق کے باعث صوبائی دارالحکومت کوئٹہ میں لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ 4 سے 6 گھنٹے، ڈویژنل ہیڈکوارٹرز میں 12 سے 14 گھنٹے جب کہ 18گھنٹے لوڈ شیڈنگ جاری ہے۔

KElectric

Loadshedding

Tabool ads will show in this div