حمزہ شہباز کی تخت پنجاب کے لیے جنگ؛ کب کیا ہوا؟

16 اپریل کو حمزہ شہباز وزیر اعلیٰ منتخب ہوئے اور 30 اپریل کو عہدے کا حلف اٹھایا تھا

حمزہ شہباز کے لیے تحریک انصاف سے پنجاب کا تخت واپس لینے کی لڑائی کافی صبر آزما رہی ہے۔

تحریک انصاف اور مخالفین کے درمیان وفاق اور پنجاب کی حکومت کے لیے جنگ مارچ کے اوائل سے شروع ہوگئی تھی لیکن اس میں تیزی 25 مارچ کے بعد آئی۔

28 مارچ کو وزیر اعلیٰ عثمان بزدار نے اپنا استعفیٰ اس وقت کے وزیر اعظم عمران خان کو پیش کردیا۔

16 اپریل کو پنجاب اسمبلی میں شدید ہنگامہ آرائی کے دوران حمزہ شہباز 197 ووٹ حاصل کرکے پنجاب کے 21ویں وزیراعلیٰ منتخب ہوگئے۔

30 اپریل کو لاہور ہائی کورٹ کے حکم کی روشنی میں حمزہ شہباز نے بطور وزیر اعلیٰ اپنے عہدے کا حلف اٹھالیا۔

ٹھیک 2 ماہ بعد 30 جون کو لاہور ہائی کورٹ نے حمزہ شہباز کے بطور وزیر اعلیٰ انتخاب کو کالعدم قرار دے دیا۔

Copy of Copy of A timeline of Pakistan's unfortunate 'grey listing' by FATF by Samaa TV

PTI

HAMZA SHAHBAZ

LAHORE HIGHCOURT

Tabool ads will show in this div