ٹک ٹاک ویڈیو کی خاطر ایک بار پھر ڈولی نے قانون ہاتھ میں لے لیا

پولیس کانسٹیبل راشد اور تین جعلی پولیس اہلکاروں کے خلاف مقدمہ درج کر لیا گیا ، ایک گرفتار

ٹک ٹاکرڈولی نے جعلی پولیس اہلکاروں کے ہمراہ ویڈیو بنائی ، پولیس نے تحقیقات کیں تو معاملہ جعل سازی کا نکلا

ٹک ٹاکر ڈولی گجرانوالہ میں پان کی دکان کی افتتاحی تقریب میں بطور مہمان خصوصی شریک ہوئیں تو ان کے ہمراہ پولیس کا پروٹوکول تھا ۔ ویڈیو وائرل ہوئی ، تو یہ معاملہ اعلی عہدیدان تک پہنچا ، تفتیش ہوئی تو معلوم ہوا کہ ٹک ٹاکر ڈولی نے ایک بار پھر پبلک اسٹینٹ اختیار کیا ۔ پروٹوکول میں جعلی پولیس اہلکاروں کو ظاہر کروایا ، جن کے خلاف اب مقدمہ درج کر لیا گیا ہے ۔

پولیس معاملہ کی تہہ تک پہنچی تو معلوم ہوا ہئ کہ پولیس کانسٹیبل راشد خود سفید شلوار قمیض میں ملبوس ٹک ٹاکر کے ساتھ تھا جبکہ راشد نے ہی مقامی افراد کو پولیس کی وردیاں فراہم کیں ، جنہوں نے ٹک ٹاکر کو پروٹول دیا ۔

اس سے پہلے بھی ٹک ٹاکر ڈولی نے قانون کی خلاف ورزی کرتے ہوئے مارگلہ ہلز میں آگ لگا کر ویڈیو شوٹ کی ۔ ٹک ٹاکر کے خلاف مقدمہ درج کیا تھا. جس کے بعد اسلام آباد ہائی کورٹ نے انکے خلاف مقدمہ درج کیا تھا۔

PUNJAB POLICE

TIKTOK

Tabool ads will show in this div