وفاقی کابینہ نے حج پالیسی 2022 کی منظوری دے دی

قومی ویسٹ مینجمنٹ پالیسی 2022 اور الیکٹرک پنکھوں کا معیار مقرر کرنے بھی منظوری

وزیر اعظم شہباز شریف کی سربراہی میں وفاقی کابینہ نے حج پالیسی 2022 کی منظوری دے دی۔

وزیر اعظم شہباز شریف کی سربراہی میں وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوا ، جس میں 7 نکاتی ایجنڈے پر غور کیا گیا۔

کابینہ نے حج پالیسی 2022، قومی ویسٹ مینجمنٹ پالیسی 2022 اور الیکٹرک پنکھوں کا معیار مقرر کرنے کی منظوری دے دی۔

وفاقی کابینہ نے اقتصادی رابطہ کمیٹی کے 22 جون اور قانون ساز کمیٹی کے 23 جون کے فیصلوں کی بھی توثیق کردی۔

اجلاس کے بعد میڈیا بریفنگ کے دوران وفاقی وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب نے بتایا کہ کابینہ نے ٹانک میں پولیو ٹیم پر حملےکی شدید مذمت کی ہے، وزیر داخلہ کو ہدایت کی ہے کہ اس واقعے کی فوری رپورٹ پیش کریں۔

مریم اورنگزیب نے کہا کہ کابینہ نے افغانستان سے ٹرانسپورٹرز کو 6 ماہ کا ملٹی پل ویزا دینے کا فیصلہ کیا ہے، ورک ویزا کیٹگری میں دیگر تمام کیٹگریز شامل کی گئی ہیں، کنٹریکٹرز، ڈرائیورز اور ہیلپرز کے ویزا کے لیے بورڈ آف انویسٹمنٹ اور ایس ا ی سی پی کی رجسٹریشن کی شرط ختم کردی گئی ہے۔

اس موقع پر قومی ویسٹ مینجمنٹ پالیسی 2022 کے حوالے سے وفاقی وزیر شیری رحمان نے کہا کہ خطرناک فضلے کو ٹھکانے لگانے سے متعلق اہم پالیسی بنائی گئی ہے، عوام اور ماحول کے تحفظ کے لیے یہ پالیسی بہت ضروری ہے۔

شیری رحمان نے کہا کہ فضلہ زیر زمین پانی کو آلودہ کرتا ہے، اس سلسلے میں ہمیں نیشنل ایکشن پلان کے تحت آگے بڑھنا ہوگا اور کیمیکل ویسٹ ڈائریکٹوریٹ بنانا ہوگی۔

FEDERAL CABINET

HAJJ 2022

PMLN,

Tabool ads will show in this div