کراچی میں کورونا کیسز مثبت آنے کی شرح 21 فیصد سے تجاوز کرگئی

24 گھنٹے کے دوران 650 ٹیسٹ ہوئے 138مثبت آئے

محکمہ صحت سندھ کے مطابق ‏کراچی سمیت سندھ بھر میں کرونا کیسز کی شرح میں اضافہ ہوا ہے، جہاں 24 گھنٹوں کے دوران 138 نئے کیسز سامنے آئے ہیں۔

محکمہ صحت کی جانب سے گزشتہ روز ریکارڈ کیے گئے اعداد و شمار کے مطابق کراچی میں مثبت کیسز کی شرح 8 فیصد تک پہنچ گئی تھی، تاہم آج یہ شرح 21 فیصد سے بھی تجاوز کرگئی ہے۔

محکمہ صحت کے مطابق کراچی میں گزشتہ 24 گھنٹے کے دوران 650 کرونا ٹیسٹ ہوئے، جن میں سے 138مثبت آئے۔

کرونا کی بڑھتی ہوئی خطرناک صورتحال کے پیش نظر محکمہ صحت سندھ نے 60 سال سے زائد عمر کے افراد کو بوسٹر ڈوز لگوانے کی ہدايت کی ہے۔

محکمہ صحت نے 12 سے 18 سال کے بچوں کی انرولمنٹ کی تفصیلات بھی مانگ لی ہیں، اور کہا ہے کہ تفصیلات اگست میں بوسٹر ڈوز مہم کیلئے مانگی گئیں ہیں۔

محکمہ سندھ کے مطابق کورونا کی قسم اومی کرون کے مزید دو نئے ویرینٹ سامنے آئے ہیں جن کی شناخت بی اے 4 (BA.4) اور بی اے 5 (BA.5) سے کی گئی ہے۔یہ دونوں نئے ویرینٹ گزشتہ اقسام کے مقابلے میں زیادہ تیزی سے پھیلتی ہیں۔

حالیہ دنوں میں سندھ میں بی اے 4 کے 4 جب کہ بی اے 5 کے 12 کیسز سامنے آئے ہیں۔ اس لئے محکمہ صحت عوام پر اس بات کا زور دیتا رہے گا کہ وہ تمام ایس او پیز پر عمل کریں، کورونا سے بچاؤ کی ویکسین کی بوسٹر خوراک لگوائیں اور جہاں تک ممکن ہوسکے بڑے عوامی اجتماعات سے گریز کریں۔

اومیکرون کے بی اے 4 (BA.4) اور بی اے 5 (BA.5) ویرینٹ سب سے پہلے جنوبی افریقا میں رواں برس جنوری اور فروری میں سامنے آئے تھے۔ اب اس کے کیسز برطانیہ میں بھی سامنے آرہے ہیں۔

بین الاقوامی سطح پر طبی ماہرین کی جانب سے ملنے والے ڈیٹا کے مطابق بی اے 4 (BA.4)، بی اے 5 (BA.5) اور بی اے 2.12.1 (BA.2.12.1) اس سے پہلے سامنے آنے والے الفا اور ڈیلٹا ویرینٹس ہی کی طرح پھیپھڑوں اور سانس کی نالی کے عضلات کو نقصان پہنچاتے ہیں۔

OMICRON

Tabool ads will show in this div