کرونا وباء کے بعد پاکستانی طلبہ کا پہلا گروپ چین روانہ

وفاقی وزیر رانا تنویر حسین اسلام آباد ایئرپورٹ پر موجود تھے

کرونا وباء کے باعث لگنے والی سفری پابندیاں اٹھنے کے بعد پاکستانی طلبہ کا پہلا گروپ اسلام آباد ایئرپورٹ سے چین روانہ ہوگیا۔

پاکستانی طلبہ کا پہلا گروپ چین روانہ ہوگیا، اس موقع پر وفاقی وزیر برائے تعلیم و پیشہ ورانہ تربیت رانا تنویر حسین بھی اسلام آباد ایئرپورٹ پر موجود تھے۔

وفاقی وزیر نے وزارت تعلیم و پیشہ ورانہ تربیت اور ایچ ای سی کے سینئر حکام کے ہمراہ چین جانیوالے طلباء سے ملاقات کی۔ اس موقع پر وفاقی وزیر نے طلباء کو تعلیم مکمل کرنے کیلئے واپس چین جانیوالے طلبہ کو مبارکباد دی۔

انہوں نے کہا کہ نوجوانوں کو حصول علم میں سہولتیں فراہم کرنا ہمارا قومی فریضہ ہے۔

انہوں نے تسلیم کیا کہ طلباء کو 2 سال سے مشکلات کا سامنا تھا، ایچ ای سی، وزارت خارجہ اور وزارت ایف ای اینڈ پی ٹی سے رابطہ کیا ہے، فیڈرل ایجوکیشن اینڈ پروفیشل ٹریننگ کی وزارت نے اس معاملے میں رہنمائی کی اور متعلقہ چینی حکام، پی آئی اے اور سول ایوی ایشن اتھارٹی سے رابطہ کیا تاکہ اس مسئلے کو فوری طور پر حل کیا جا سکے۔

رانا تنویز حسین نے پی آئی اے کی کوششوں کو سراہتے ہوئے کہا کہ مصروف حج شیڈول کے باوجود قومی ایئر لائن نے پاکستانی طلباء کیلئے پرواز کا انتظام کیا۔

وفاقی وزیر کا کہنا ہے کہ آج 105 طلباء واپس جارہے ہیں اور جلد باقی بھی واپس جاسکیں گے۔ انہوں نے سیکریٹری تعلیم سمیت متعلقہ حکام کی اس مسئلے کے حل کیلئے کاوشوں کو بھی سراہا۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ تمام متعلقہ اسٹیک ہولڈرز بشمول چائنیز ایمبیسی، اسلام آباد پاکستان، ایم او ایف ای پی ٹی، ایچ ای سی اور ایم او ایف اے کے درمیان بات چیت کا ایک دور منعقد ہوا جس میں 5 ہزار 832 طلباء کے مسئلے کو حل کیا گیا، ان طلبہ کو تین مراحل میں چین بھیجا جائے گا۔

رانا تنویر حسین کا کہنا ہے کہ پاکستانی طلباء کے مسائل انتہائی اہمیت کے حامل ہیں اور انہوں نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ پاکستانی طلباء کے تحفظات کو ترجیحی بنیادوں پر دور کیا جائے گا۔

پاکستان

CHINA

COVID-19

Tabool ads will show in this div