افغانستان میں بھی مویشی لمپی اسکن کا شکار

قندھار میں لمپی اسکن کے 4 کیسز رپورٹ ہوئے

پاکستان کے بعد افغانستان میں بھی مویشی لمپی اسکن وائرس کاق شکار ہورہے ہیں۔

افغان نیوز ویب سائیٹ کے مطابق وزارت زراعت و لائیو اسٹاک نے تصدیق کی ہے کہ پاکستان سے ملحقہ صوبہ قندھار میں لمپی اسکن کے 4 کیسز رپورٹ ہوئے ہیں۔

صوبہ قندھار کے ضلع دامن میں وزارت زراعت و لائیو اسٹاک کے سربراہ شاہ ولی نے کہا ہے کہ یہ بیماری غیر قانونی راستوں سے مویشیوں کی اسمگلنگ کی وجہ سے آئی ہے۔

جانوروں کے مقامی ڈاکٹر فہیم سپائی نے کہا ہے کہ مویشیوں کو لگنے والی یہ بیماری پاکستان سے آئی ہے۔

دوسری جانب صوبائی حکام کا کہنا ہے کہ اگر مرکزی حکومت نے اس وبا کے سدباب کے لیے اقدامات نہ اٹھائے تو یہ پوری ملک میں پھیل سکتی ہے۔

لمپی اسکن وائرس میں جانور کے جسم پر دانے نمودار ہوتے ہیں جو جسم کے اندر پھیلتے ہیں اور وقت گزرنے کے ساتھ ادانوں میں پس (پیپ) بھر جاتی ہے اور ان دانوں میں ہونے والی تکلیف کی وجہ سے جانور بیٹھ نہیں سکتے۔

پاکستان میں رواں سال سندھ سے لمپی اسکن کی وبا سے متعلق سب سے پہلے خبریں آئی تھیں، سندھ ھکومت نے جانوروں کی ویکسی نیشن کے لئے بیرون ملک سے خاص طور پر تیکی بھی منگوائے۔

رواں ماہ کے دوران جنوبی پنجاب میں بھی لمپی اسکن کے کیسز سامنے آئے ہیں۔

LUMPY SKIN DISEASE

LUMPY SKIN

Lumpy skin virus

Tabool ads will show in this div