سادگی کی دعویدار پی ٹی آئی حکومت کی شاہ خرچیوں کی رپورٹ سامنے آگئی

پی ٹی آئی حکومت نے اربوں روپے ضائع کئے

سابق وزیراعطم عمران خان نے وزیراعظم ہاؤس کو یونیورسٹی بنانے اور وی وی آئی پی کلچر کو ختم کے دعوے کئے تھے، لیکن جس سادگی کے دعوے عمران خان کی جانب سے کئے گئے ان میں سے ایک پر بھی عمل نہ ہوسکا۔

عمران خان نے اپنے دعوؤں کے برعکس وزیراعظم ہاؤس کی تزئین و آرائش پر ہی 10 کروڑ 66 لاکھ روپے اڑا دیئے گئے۔ وزیراعظم سیکرٹریٹ کے لئے بھی 15 کروڑ 53 لاکھ روپے کی منظوری عمران خان نے دی۔ منسٹر انکلیو میں مرمت و بحالی پر 9 کروڑ 64 لاکھ روپے کے اخراجات کئے گئے۔

سابق وزیراعظم عمران خان نے بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کو ووٹ کا حق دینے کے لئے بہت آواز اٹھائی، تاہم اس میں بھی پاکستان کو سوائے نقصان کے کچھ حاصل نہ ہوا، عمران خان نے صدرمملکت عارف علوی کو ذمہ داری سونپی تھی کہ وہ اس حوالے سے مشورے کریں اور کوئی حل نکالیں۔

صدرعارف علوی نے مختلف ماہرین اور کمپنیوں سے میٹنگ کی اور مشورے کئے، اور الیکٹرانک ووٹنگ کے لئے صرف مشورہ مہم پاکستان کو 38 کروڑ 78 لاکھ روپے میں پڑی۔ گزشتہ ماہ قومی اسمبلی میں الیکٹرونک ووٹنگ مشین کا قانون ہی ختم کردیا گیا، جس کے بعد مشوروں پر لگی 38 کروڑ روپے کی رقم بھی ضائع ہوگئی۔

شہبازشریف کے خلاف پاکستانی حکومت نے برطانیہ میں کیس کیا، ایسیٹ ریکوری یونٹ آف پاکستان کی جانب سے 11 دسمبر 2019 کو ویسٹ منسٹر مجسٹریٹ لندن میں درخواست جمع کرائی گئی، جس میں استدعا کی گئی کہ شہباز شریف اور سلیمان شہباز کے اکاؤنٹس منجمد کئے جائیں، لیکن 21 ماہ کی تحقیقات میں شہباز شریف اور ان کے خاندان کے بینک اکاؤنٹس میں منی لانڈرنگ، کرپشن اور مجرمانہ سرگرمیوں کا کوئی ثبوت سامنے نہیں آیا، اور کیس پر کام کرنے والے وکیل کی فیس کی مد میں پاکستانی قوم کے 6 کروڑ 74 لاکھ روپے کے اخراجات مٹی ہوگئے۔

نیویارک میں نیم دیوالیہ پی آئی اے کے روز ویلٹ ہوٹل کیس پر 10 ارب13 کروڑ خرچ ہوگئے، برٹش ورجن آئی لینڈ کی عدالت نے فیصلہ دیا تھا کہ نیویارک امریکا میں قومی ایئر لائن پی آئی اے کے ملکیتی ہوٹل روز ویلٹ کی کرکی کرلی جائے، پاکستان کی جانب سے صرف کرکی کو روکنے کے لئے کیس لڑا گیا اور وکیل کو فیس کی مد میں ساڑھے 27 کروڑ کی رقم ادا کی گئی۔

صرف کرکی کے خوف سے پاکستانی حکومت نے ہوٹل پر امریکی ٹیکسز، نیویارک سٹی فیس اور عملے کی بقایا تنخواہوں کی مد میں 10 ارب روپے خرچ کردیئے گئے۔

parliament

PTI

corruption case

Tabool ads will show in this div