سندھ حکومت کا آج سے بازار اور ریسٹورنٹ جلد بند کرنے کا اعلان

فیصلہ بجلی کی بچت کیلئے کیا گیا، نوٹیفکیشن جاری

سندھ حکومت نے آج بروز جمعہ سے بازاراور ریسٹورنٹ رات 9 بجے بند کرنے کا اعلان کردیا ہے۔

بجلی کی بچت کے لئے سندھ حکومت نے وفاق کے اشتراک سے بڑا فیصلہ کیا ہے۔ نئی پابندیوں سے متعلق محکمہ داخلہ نے نوٹیفکیشن جاری کردیا ہے۔

سندھ میں تمام بازار اور شاپنگ مالز رات 9 بجے بند ہونگے۔ تمام شادی ہالز اور شادی کی تقریبات ، ریسٹورنٹ اور کافی شاپس کو رات 11 بجے تک بند کرنا ہوگا۔ اس کے علاوہ9 بجے کے بعد صرف پیٹرول پمپ، میڈیکل اسٹور، بیکری اور ڈیری شاپس کو کھلے رکھنے کی اجازت ہوگی۔

محکمہ داخلہ سندھ نے بتایا ہے کہ یہ پابندیاں ایک ماہ کے لئے جاری رہیں گی اور اس حوالے سے تمام ڈپٹی کمشنرزاور ایس ایس پیز کو عملدرآمد کی ہدایت جاری کردی گئی ہے۔

اس فیصلے کا اطلاق آج شام سے باضابطہ طور پر ہوگا۔

الیکٹرونکس مارکیٹ ایسوسی ایشن کے صدر رضوان عرفان نے سماء کو بتایا کہ بازار بند کرنے کے حوالے سے کشمنر آفس میں اجلاس ہوا تھا جس میں ایڈمنسٹریٹر کراچی مرتضی وہاب بھی موجود تھے۔ اجلاس میں تاجروں سے بازار جلد بند کرنے کے حوالے سے رائے لی گئی تھی۔

رضوان عرفان نے بتایا کہ تاجروں کا کہنا تھا کہ اگر لوڈ شیڈنگ نہیں ہوگی تو مارکیٹیں رات 9 بجے بند کردیں گے۔ انھوں نے کہا کہ حکومت بازار تو بند کرنا چاہتی ہے مگر کوئی متبادل نہیں دیتی۔

صوبائی وزیرشرجیل میمن نے سماء کو بتایا کہ حکومت نہیں چاہتی ہے کہ کسی کو پریشانی ہو،یہ فیصلہ خوشی سے نہیں کیا مگر کوئی اور حل نہیں ہے۔

شرجیل میمن نے کہا کہ کاروبار بہت ضروری ہے مگر لوڈشیڈنگ پر قابو پانا ضروری ہے۔

انھوں نے واضح کیا کہ بازار جلد بند کرنے کا فیصلہ عارضی ہے اور حالات بہتر ہونے پر یہ پابندیاں ختم کردی جائیں گی۔

شرجیل میمن نے بتایا کہ کےالیکٹرک سے درخواست کی ہے کہ لوڈشیڈنگ کا دورانیہ کم سے کم رکھیں۔ تاجر برادری نے بھی اس فیصلے میں ملے جلے ردعمل کا اظہار کیا ہے۔

تاجر رہنما زبیر موتی والا نے سماء سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ بازار جلد بند کرنے کا فیصلہ درست ہے۔ اس فیصلے سے چھوٹے تاجروں کا کوئی نقصان نہیں ہوگا۔ ان کا کہنا تھا کہ ملک کو اقتصادی بحران کا سامنا ہے اور عام آدمی کی سمجھ میں یہ نہیں آرہا۔

سندھ

Tabool ads will show in this div