موسلا دھار بارش نے لاہور کا نشیبی علاقہ ڈبو دیا

مون سون اسپیل کی پہلی انٹری 22 جون سے ہوگی

پنجاب کے مختلف شہروں میں موسلا دھار بارش نے گرمی کا زور تو توڑ دیا، تاہم شہر کے نشیبی علاقے پانی میں ڈوب گئے۔ میٹ آفس کے مطابق صوبے میں مون سون اسپیل کی پہلی انٹری 22 جون سے ہوگی، جب کہ کراچی سمیت سندھ بھر میں پری مون سون بارشیں معمول سے زیادہ ہونے کی پیش گوئی کی گئی ہے۔

لاہور

لاہور میں تیز آندھی بارش سے بجلی کا ڈسٹری بیوشن نظام درہم برہم ہوگیا۔ جہاں لیسکو کے 200 سے زائد فیڈرز ٹرپ کرگئے۔ فیڈرز ٹرپ ہونے سے شہر کے متعدد علاقے اندھیرے میں ڈوب گئے۔ ہربنس پورہ، جلو موڑ، باغبانپورہ، مغلپورہ، فتح گڑھ، والٹن روڈ ،چونگی امرسدھو، سمن آباد، شاہدرہ، راوی روڈ ،آر اے بازار، نشاط کالونی، بھٹہ چوک، گڑھی شاہو، دھرم پورہ، انارکلی، ہال روڈ، بیڈن روڈ، قلعہ گجر سنگھ، باغبانپورہ، شالیمار لنک روڈ، شاد باغ، بادامی باغ، ریلوے اسٹیشن کے متعدد علاقے بجلی سے محروم ہوگئے۔ جس سے شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا رہا۔

لاہور میں بارش کے باعث پاکستان اسپورٹس بورڈ کے کوچنگ سینٹر کی چھت ٹپک پڑی، چھت ٹپکنے سے قومی پہلوان ٹریننگ نہ کرسکے۔ ایوی ایشن ذرائع کے مطابق شہر میں موسم کی خرابی کے سبب فضائی آپریشن بھی معطل رہا۔

لیسکو الرٹ

ترجمان لیسکو کے مطابق لیسکو ریجن کے مختلف علاقوں میں شدید آندھی کا سلسلہ جمعرات کی شام شروع ہوا، آندھی کے باعث لاہور، اوکاڑہ اور شیخوپورہ سرکلز کے کچھ علاقے متاثر ہوئے ہیں۔ لیسکو چیف چوہدری محمد امین کی ہدایت پر فیلڈ اسٹاف کو الرٹ کردیا گیا ہے۔ لیسکو ریجن میں شدید آندھی کے پیش نظر انتظامیہ کی معزز صارفین سے تعاون کی اپیل ہے۔

لیسکو نے صارفین سے درخواست کی ہے کہ آندھی اور بارش کے دوران بجلی کی تنصیبات سے دور رہیں اور بجلی معطل ہونے کی صورت میں لیسکو کو مطلع کرکے عملے کے آنے کا انتظار کریں۔

محکمے کی جانب سے جاری رپورٹ کے مطابق شہر کے بیشتر علاقوں میں تیز اور ہلکی بارش کا دوسرا اسپیل جاری ہے۔ پہلے اسپیل میں رات ساڑھے 11بجے سے 2 بجے تک بارش کا سلسلہ جاری رہا۔ دوسرے اسپیل میں صبح ساڑھے 6 بجے شروع ہونے والی بارش ابھی بھی جاری ہے۔ لاہور میں سب سے زیادہ بارش جوہر ٹاﺅن میں 38 ملی میٹر ریکارڈ کی گئی۔

وزیراعلیٰ شہباز شریف

بارش میں نکاسی آب کا جائزہ لینے کیلئے ڈی سی لاہور نے مختلف علاقوں کا دورہ کیا۔ جب کہ وزیراعلی پنجاب حمزہ شہباز شریف نے بھی واسا، ریسکیو 1122، پی ڈی ایم اے اور متعلقہ اداروں کو الرٹ رہنے کا حکم دے دیا۔ اپنے بیان میں حمزہ شہباز کا کہنا تھا کہ نشیبی علاقوں سے نکاسی آب مقرر کردہ وقت میں مکمل کی جائے۔ افسران خود فیلڈ میں نکلیں اور نکاسی آب کے کام کی نگرانی کریں۔ بارش کے دوران ٹریفک کو رواں دواں رکھنے کیلئے مؤثر ٹریفک منیجمنٹ کو یقینی بنایا جائے۔

وزیراعلیٰ پنجاب کا یہ بھی کہنا تھا کہ خدانخواستہ کسی بھی ناخوشگوار واقعہ کی صورت میں متعلقہ ادارے بروقت موقع پر پہنچیں اور فی الفور امدادی سرگرمیاں شروع کی جائیں۔

کراچی

محکمہ موسمیات کے مطابق کراچی میں آئندہ 24 گھنٹوں کے دوران موسم گرم اور مرطوب رہے گا، تاہم رات گئے جمعرات اور جمعہ 17 جون کی صبح کراچی کے علاقے ناظم آباد، سرجانی ٹاؤن، نارتھ کراچی، ڈی ایچ اے، سی ویو، کلفٹن، ایم اے جناح روڈ، گرومندر، ٹاور گلشن معمار، سپر ہائی وے اور سہراب گوٹھ ميں بھی بوندا باندی ہوئی۔

ترجمان کے مطابق شہر قائد میں رات کے اوقات میں بوندا باندی کا امکان ہے۔ صبح کے اوقات کراچی کا درجہ حرارت 31 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا۔ جب کہ ہوا میں نمی کا تناسب 72 فیصد رہا۔

کراچی میں جولائی کی ابتداء میں مون سون کی بارشوں ہونے کا امکان ہے۔ پری مون سون کے دوران کراچی سمیت سندھ بھر میں معمول سے زیادہ بارشوں کی پیشگوئی کی گئی ہے، سندھ میں پری مون سون بارشوں کا اسپیل22جون تک چلے گا۔ چیف میٹرو لوجسٹ سردار سرفراز کا کہنا ہے کہ 29 اور 30 جون سے بارشوں کا آغاز ہو جائے گا۔

محکمے کا کہنا ہے کہ جولائی، اگست، ستمبر میں معمول سے بہت زیادہ بارشیں متوقع ہیں۔

پنجاب

پنجاب میں مون سون نے رت بدل دی، بارشوں کی جھڑی سے موسم سہانا ہو گیا۔ لاہور میں ابر کرم برسا، ٹھنڈی ٹھنڈی ہواؤں نے موسم کو اور حسین بنا دیا، گرمی کی شدت بھی کم ہوگئی۔

لاہور، اسلام آباد، راول پنڈی، اٹک، میانیوالی، جھنگ، قائد آباد سمیت مختلف شہروں میں جمعرات کو رات گئے موسلا دھار بارش نے جہاں موسم حسین اور خوشگوار بنایا وہیں گرمی کا زور بھی توڑ ڈالا۔ پنجاب کے مختلف شہروں میں باران رحمت سے سبزے کی خوبصورتی کو چار چاند لگ گئے۔ کہیں ہلکی اور کہیں تیز بارش نے شہریوں کو بھی خوش کردیا۔

ٹوبہ ٹیک سنگھ میں بارش اور ٹھنڈی ہواؤں نے موسم سہانا بنا دیا۔ جھنگ، چنیوٹ اور گردونواح میں صبح سویرے بادل کھل کر برسے۔ محکمے کے مطابق آج بروز جمعہ 17 جون کو بھی مختلف شہروں میں موسلا دھار بارش کی پیش گوئی کی گئی ہے۔

اسلام آباد، پنجاب، خیبرپختونخوا میں بھی مزید بادل برسیں گے، کشمیر اور گلگت بلتستان میں بھی بارش کا امکان ہے۔ میٹ آفس کے مطابق لاہور میں مون سون کے پہلے اسپیل کی انٹری 22 جون سے ہوگی۔ میدانی اور بالائی سمیت جنوبی اضلاع میں بھی بارش کا امکان ہے۔ کئی علاقوں میں تیز ہوائیں بھی چلنے کی پیش گوئی کی گئی ہے۔ موجودہ سسٹم کے تحت وفاقی دارالحکومت اسلام آباد، راولپنڈی، مری اور دیگر علاقوں میں آج سے 21 جون تک آندھی اور گرج چمک کے ساتھ بارش کا امکان ہے۔

20 جون تک ملتان، ڈی جی خان، راجن پور، بھکر، لیہ میں آندھی اور گرج چمک کے ساتھ بارش ہو سکتی ہے۔

سوات، چترال، مانسہرہ، کوہستان، ایبٹ آباد میں 22 جون تک آندھی اور گرج چمک کے ساتھ بارش کا امکان ہے۔

21 جون کو مغربی ہواؤں کا سلسلہ افغانستان سے ملک کے بالائی علاقوں پر اثر انداز ہو سکتا ہے، 21 سے 22 جون تک خیبر پختون خوا کے مختلف علاقوں میں موسلا دھار بارش کا امکان ہے۔

خیبرپختونخوا

محکمے کے مطابق پشاور میں بارشوں کا سلسلہ 19 جون سے شروع ہوگا۔ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران سب سے زیادہ بارش بنوں میں 40 ملی میٹر ریکارڈ کی گئی۔

بحیرۂ عرب سے مرطوب ہوائیں ملک کے بالائی علاقوں میں اثر انداز ہو رہی ہیں، جن کے باعث کشمیر اور گلگت بلتستان کے مختلف علاقوں میں 23 جون تک وقفے وقفے سے بارش کا امکان ہے، اس دوران آندھی اور گرج چمک کے ساتھ بعض مقامات پر موسلا دھار بارش کا بھی امکان ہے۔

بلوچستان

17 جون سے سے 20 جون کے دوران بلوچستان کے اضلاع سبی، بولان، نصیر آباد، جھل مگسی، مستونگ، بارکھان، زیارت، ژوب، کوئٹہ، قلات، خضدار، چمن اور ہرنائی میں گرج چمک کے ساتھ بارش کا امکان ہے۔ محکمہ موسمیات کے مطابق پاک ایران اور پاک افغان سرحدی علاقوں میں گرد آلود ہوائیں چلنا شروع ہو گئی ہیں۔ شمال مشرقی بلوچستان میں آج سہ پہر سے پری مون سون بارش کا نیا سلسلہ شروع ہونے کا امکان ہے۔

پی ڈی ایم اے کے مطابق آج سے 3 دن تک گرج چمک کے ساتھ بارش، ژالہ باری اور سیلابی صورتِ حال کا امکان ہے۔ سسٹم کے زیرِ اثر علاقوں میں آندھی اور آسمانی بجلی گرنے کے خدشات بھی ہیں۔ پی ڈی ایم اے کی جانب سے متوقع سسٹم کے زیرِ اثر اضلاع کے ڈپٹی کمشنرز کے لیے الرٹ جاری کر دیا گیا ہے۔

پی ڈی ایم اے نے متعلقہ اضلاع کے ڈپٹی کمشنرز کو بارشوں کے دوران ضروری عملے کو تیار رکھنے کی ہدایت کر دی ہے۔ پی ڈی ایم اے نے کوہِ سلیمان اور ہرنائی رینج کے ساتھ زیریں بلوچستان کے لیے فلڈ وارننگ بھی جاری کی ہے۔ پی ڈی ایم اے نے سیلابی صورتِ حال کے پیشِ نظر تمام متعلقہ حکام کو الرٹ رہنے کی ہدایات بھی کی ہیں۔

اربن فلڈنگ کا خطرہ

محکمہ موسمیات کے مطابق اس سسٹم کے تحت ہونے والی بارشوں سے خیبر پختونخوا کے ندی نالوں میں طغیانی رہے گی، جب کہ پشاور میں اربن فلڈنگ کا خطرہ ہے۔ سندھ میں سکھر، جیکب آباد، لاڑکانہ میں 21 جون سے 22 جون تک گرد آلود ہوائیں چلنے اور گرج چمک کے ساتھ بارش کا امکان ہے۔

متعلقہ اداروں کو الرٹ رہنے کی ہدایت

موسلا دھار بارش کے باعث گلگت، کشمیر اور بالائی خیبر پختون خوا میں لینڈ سلائیڈنگ کا خدشہ ہے، جبکہ بلوچستان کے مشرقی علاقوں میں طغیانی کا خدشہ بھی موجود ہے۔ محکمہ موسمیات کی جانب سے تمام متعلقہ اداروں کو الرٹ رہنے کی ہدایت کی گئی ہے۔

بارش کے باعث حادثات

بارش کے باعث مختلف حادثات میں 11 افراد جاں بحق ہوگئے۔ جمعرات کو رات گئے تيز ہواؤں کے ساتھ بارش سے نشتر کالونی ميں مکان کی ديوار گرنے سے ايک ہی خاندان کے5 افراد جاں بحق ہوگئے۔

وزیراعلیٰ پنجاب کی جانب سے واقعہ پر لواحقین سے افسوس کا اظہار کیا گیا ہے۔ وزیراعظم کا کہنا تھا کہ دکھ کی گھڑی میں وہ سوگوارخاندان کے ساتھ کھڑے ہیں۔

جمعے کے روز موسم

خیبرپختونخوا، پنجاب، اسلام آباد، خطۂ پوٹھوہار، گلگت بلتستان اورکشمیر میں مطلع جزوی ابرآلود رہنے کے علاوہ تیزہواؤں، آندھی اور گرج چمک کے ساتھ بارش کا امکان ہے، جب کہ بالائی سندھ اور شمال مشرقی بلوچستان میں گرد آلود ہوائیں، آندھی چلنے کے علاوہ گرج چمک کے ساتھ بارش کی بھی توقع ہے۔ اس دوران بعض مقامات پر موسلا دھار بارش اور ژالہ باری کا بھی امکان ہے۔ تاہم ملک کے دیگر علاقوں میں موسم گرم اور خشک رہے گا۔

ہفتے کے روز موسم

خیبرپختونخوا، پنجاب، اسلام آباد، خطۂ پوٹھوہار، گلگت بلتستان اور کشمیر میں مطلع جزوی ابرآلود رہنے کے علاوہ تیزہواؤں ، آندھی اور گرج چمک کے ساتھ بارش کا امکان ہے، جب کہ بالائی سندھ اور شمال مشرقی بلوچستان میں گرد آلود ہوائیں ، آندھی چلنے کے علاوہ گرج چمک کے ساتھ بارش کی بھی توقع ہے۔

اس دوران بعض مقامات پر موسلادھاربارش اور ژالہ باری کا بھی امکان ہے۔ تاہم ملک کے دیگر علاقوں میں موسم گرم اور خشک رہے گا۔

سب سے زیادہ بارش کہاں ہوئی؟

محکمہ موسمیات کے مطابق گزشتہ روز سب سے زیادہ بارش جھنگ میں 81 ملی میٹر ریکارڈ کی گئی، جبکہ راولپنڈی میں 46، اسلام آباد میں 41، گوجرانوالہ میں 25، جہلم میں 23، گجرات اور مری میں 19، لاہور میں 17، قصور میں 15، سیالکوٹ میں 14، منڈی بہاؤالدین میں 13 اور فیصل آباد میں 1 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی۔

گزشتہ روز خیبر پختونخوا میں بھی بارش کا سلسلہ کہیں کہیں جاری رہا، جہاں بنوں میں 40، مالم جبہ میں 13، بالا کوٹ میں 10، دیر میں 2 ملی میٹر بارش ریکارڈ ہوئی۔

آزاد کشمیر کے علاقوں کوٹلی میں گزشتہ روز 22، راولا کوٹ میں 11 اور مظفر آباد میں 2 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی۔

Rain

لاہور

weather

PUNJAB

MET OFFICE

Tabool ads will show in this div