سندھ کا 1600 ارب روپے کا بجٹ کل پیش کيا جائے گا

ترقیاتی بجٹ 222 ارب سے بڑھا کر 260 ارب کرنےکاامکان

سندھ کا مالی سال دو ہزار بائيس اور تئيس کا بجٹ کل پیش کيا جائے گا۔

سولہ سو ارب روپے سے زائد کے متوقع بجٹ ميں 260 ارب روپے ترقياتی بجٹ کيلئے مختص کرنے کا فيصلہ کيا گيا ہے۔

ترقياتی کاموں، تعليم، صحت، بلديات اور آبپاشی سميت ديگر محکموں پر کتنا خرچ کرنا ہے؟ وزيراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کل آئندہ مالی سال کے بجٹ تقرير ميں تفصيلات پيش کريں گے۔

دستاویزات کے مطابق 1600 ارب روپے کے متوقع بجٹ ميں گزشتہ مالی سال کے مقابلے ميں 123ارب سے زائد کا اضافہ کيا جائے گا۔

سندھ کا ترقیاتی بجٹ222ارب سے بڑھا کر260 ارب اور غیرترقیاتی بجٹ میں بھی 100ارب روپے تک اضافے کا امکان ہے۔

بجٹ ميں 80فیصد جاری منصوبوں کے لئے210ارب روپے اور نئے منصوبوں کے لئے50ارب رکھے جانے کا امکان ہے۔

محکمہ زراعت کے غیرترقیاتی بجٹ میں دو ارب، محکمہ خزانہ میں 6ارب اور صحت میں7ارب کے اضافے کی توقع ہے۔

یونیورسٹیزبورڈ کا بجٹ 6ارب سے بڑھاکر 7ارب روپے کرنے کا امکان ہے جبکہ اسکول ایجوکیشن کا غیرترقیاتی بجٹ بھی 222ارب روپے سے بڑھاکر228ارب کئے جانے کی توقع ہے۔

سندھ کے بجٹ ميں200اسکولز کو اپ گریڈ کرکے ہر ڈویژن میں سائنس میوزیم قائم کرنے کا منصوبہ بھی پيش کئے جانے کا امکان ہے۔

sindh govt

BUDGET 2022-23

Tabool ads will show in this div