پنجاب کا آئندہ مالی سال کا بجٹ کیا ہوگا؟ سماء کو تفصیلات موصول

بجٹ 13 جون کو پیش ہوگا، جس کا حجم 683 ارب روپے سے زائد ہے

سال 2022-23 میں پنجاب کے بجٹ کی تفصیلات سما سامنے لے آیا، پنجاب کا آئندہ مالی سال کا بجٹ بلحاظ حجم پہلے سے بہتر ہوگا۔

موصول تفصیلات کے مطابق پنجاب حکومت 13جون کو آئندہ مالی سال 2022-23 کا بجٹ صوبائی اسمبلی میں منظوری کیلئے پیش کرے گی۔

پنجاب حکومت کا آئندہ مالی سال کے بجٹ کا حجم 683 ارب 50 کروڑ روپے ہوگا۔ ترجمان محکمہ خزانہ پنجاب کے مطابق بجٹ میں کوئی نیا ٹیکس نہیں لگایا جارہا۔

صوبے کا مالی سال 2022-23 کا بجٹ وفاقی طرز کا ہوگا، بجٹ میں مہنگائی پر کنٹرول کیلئے خصوصی امدادی پیکج متعارف کروایا جائے گا، عوام کی قوت خرید میں اضافے کیلئے اشیاء خورونوش کی قیمتیں کنٹرول کی جائیں گی، جب کہ لوڈشیڈنگ میں کمی کیلئے توانائی کے مؤثر استعمال کو یقینی بنایا جائے گا۔

سماء کو موصول دستاويز کے مطابق تعلیم کیلئے 56 ارب، صحت کيلئے 173 ارب روپے مختص کرنے کا فیصلہ کيا گيا ہے۔

دستاویز کے مطابق سڑکوں کیلئے 78 ارب روپے، مستحکم ترقیاتی منصوبوں کيلئے 58 ارب 50 کروڑ، صاف پانی کے منصوبوں کیلئے 11 ارب 95 کروڑ کی رقم مختص کی گئی ہے۔

رپورٹ کے مطابق آئندہ مالی سال کے صوبائی بجٹ میں شہری ترقی کيلئے 21 ارب، زراعت 14 ارب 77 کروڑ، آبپاشی کيلئے 27 ارب 63 کروڑ، جنوبی پنجاب کيلئے 31 ارب 50 کروڑ، محکمہ ترقیاتی و منصوبہ بندی کی 28 ارب رکھ گئے ہیں۔

مالی سال 23-2022ء کے بجٹ میں لائیواسٹاک کیلئے 4 ارب 29 کروڑ، آئی ٹی اور اصلاحات کیلئے 6 ارب جبکہ جنگلات کيلئے 4 ارب 50 کروڑ روپے رکھے گئے ہيں محکمہ خزانہ پنجاب کے مطابق بجٹ میں کوئی نیا ٹیکس نہیں لگایا جارہا، بجٹ ميں مہنگائی پر کنٹرول کيلئے خصوصی امدادی پیکيج متعارف کرایا جائے گا۔

پنجاب کے بجٹ میں کم وسیلہ افراد کو بجلی کے بلوں کی ادائیگی میں خصوصی رعایت دی جائے گی، صوبائی محصولات میں دی گئی رعایت برقرار رکھی جائے گی۔ آٹے کی کم قیمت پر دستیابی کا وزیر اعلیٰ پنجاب حمزہ شہباز کا سہولت پیکج آئندہ مالی سال میں بھی جاری رکھا جائے گا۔

بجٹ کا بڑا حصہ ترقیاتی مقاصد کے حصول پر خرچ کیا جائے گا، پنجاب کے آئندہ مالی سال کے بجٹ میں حکومت کی اؤلین ترجیح سماجی شعبہ کی ترقی اور معیشت کی بحالی ہوگی، بجٹ 2022-23 میں تعلیم، صحت، زراعت، مواصلات کے میدان میں کئی اہم اقدامات متعارف کروائے جارہے ہیں، آئندہ بجٹ میں پائیدار ترقیاتی مقاصد کے حصول کیلئے ضلعی سطح پر عوامی مسائل کے حل کو یقینی بنایا جائے گا۔

حکومتی دعویٰ کے مطابق اس سال پیش کیے جانے والا پنجاب کا بجٹ متوازن اور عوام دوست بجٹ ہوگا۔ بجٹ سرکاری ملازمین اور دیہاڑی دار طبقہ دونوں کیلئے خوشخبری لائے گا، جب کہ بجٹ بلحاظ حجم پہلے سے بہتر ہوگا۔

دوسری جانب وزیراعلیٰ پنجاب حمزہ شہباز نے کابینہ کا دوسرا اجلاس طلب کرلیا ہے۔ اجلاس میں سال 2022-23 کے بجٹ کی منظوری ایجنڈے میں شامل ہے۔

کابینہ اجلاس میں سالانہ ترقیاتی منصوبوں کی منظوری بھی ایجنڈے میں شامل ہے۔ صوبائی کابینہ کے اجلاس میں یکم جون کی میٹنگ منٹس کی منظوری ایجنڈے کا حصہ ہے۔

اجلاس میں بجٹ تجاویز اور اے ڈی پی کے تحت نئے ترقیاتی منصوبوں کا جائزہ لیا جائے گا۔ صوبائی وزراء سردار اویس لغاری، ملک محمد احمد خان، عطااللہ تارڑ، ایم پی اے ذیشان رفیق، پرنسپل سیکریٹری وزیراعلیٰ، چئیرمین پی اینڈ ڈی، سیکریٹری خزانہ اور اعلیٰ حکام اجلاس میں شرکت کریں گے۔ تاہم ابھی تک یہ فیصلہ نہیں ہوسکا کہ پنجاب کا وزیر خزانہ کون ہوگا۔

PUNJAB ASSEMBLY

HAMZA SHEHBAZ

BUDGET 2022-23

بجٹ2023

Tabool ads will show in this div