منی لانڈرنگ کیس،شریک ملزم مقصود چپڑاسی انتقال کرگئے

بیرون ملک مقیم تھے

شہبازشریف اوران کے خاندان کے خلاف منی لانڈرنگ کیس کا اہم نام مقصود چپڑاسی انتقال کرگئے ہیں۔

سماء کے نمائندے خصوصی عاصم نصیر نے بتایا کہ منی لانڈرنگ کیس کے اہم نام اور شریف خاندان کے کاروبار میں شامل مقصود چپڑاسی حرکت قلب بند ہونے سے فوت ہوئے۔

مقصود چپڑاسی ان دنوں بیرون ملک مقیم تھے اور ان کے اکاؤنٹ میں رقم آنے پر اس کو کیس میں شامل کیا گیا تھا۔

مقصود چپڑاسی کے اکاؤنٹس میں کروڑوں روپے نکلنے کا دعوی شہزاد اکبر نے کیا تھا۔

سماء نے مقصود چپڑاسی کی موت کی وجہ جاننے کےلیے ڈیتھ سرٹیفیکٹ کی کاپی حاصل کرلی۔

ڈیتھ سرٹیفیکیٹ دبئی پولیس کی درخواست پرمنسٹری آف ہیلتھ نےجاری کیا۔

ڈیتھ سرٹیفیکیٹ میں مقصود چپڑاسی کی موت کی وجہ قدرتی قرار دی گئی ہے۔

یہ بھی بتایا گیا کہ مقصود کا انتقال 7جون کو ہوا اور 9جون کو ان کا ڈیتھ سرٹیفیکٹ جاری ہوا۔

ایف آئی اے پراسیکیوٹر نے سماء کو بتایا کہ مقصود کے انتقال سے مقدمے(منی لانڈرنگ کیس) میں کوئی فرق نہیں پڑے گا،نہ یہ گواہ تھے اور نہ مدعی،یہ کیس چلتا رہے گا۔

انھوں نے بتایا کہ مقصود سے متعلق تفتیش کو پہلے ہی کیس کا حصہ بنادیا گیا ہے۔

مقصود چپڑاسی کا چالان میں کردار بھی سماء کو موصول ہوا ہے۔

چالان کے متن میں بتایا گیا کہ مقصود چپڑاسی کے نام پر7 بنک اکاؤنٹس تھے اوران اکاؤنٹس میں 8 سال میں 3 ارب روپے سے زائد رقم جمع کروائی گئی۔

متن میں یہ بھی بتایا گیا کہ چالان کے مطابق مقصود چپڑاسی کی 25 ہزار روپے ماہانہ تنخواہ تھی اوروہ ماڈل ٹاؤن ہیڈ آفس میں ملازم تھا۔

کیس کی تفتیش کے دوران ہی مقصود کو دل کی تکلیف ہوئی تھی۔ مقصود کے اہل خانہ نے ان کے انتقال پر کچھ کہنے سے گریز کیا تاہم ان کے قریبی ذرائع نے تصدیق کی مقصود انتقال کرگئے۔

ن لیگ کا موقف تھا کہ شریف خاندان سے منسلک ملازمین کو دوران تفتیش ہراساں کیا جاتا رہا جس کے وجہ سے وہ مختلف بیماریوں کا شکار ہوئے۔اس سے قبل شریف خاندان کے ملازم فضل داد بھی انتقال کرچکے ہیں۔

پاکستان تحریک انصاف کے رہنما ڈاکٹرشہبازگل نے ٹویٹ کرتے ہوئے سوال کیا تھا کہ کیا مقصود چپڑاسی کو قتل کردیا گیا؟

Shehbaz Sharif

Tabool ads will show in this div