شمالی وزیرستان سے پولیو کا ایک اور کیس رپورٹ

رواں سال پولیو کیسز کی تعداد 7 ہوگئی
Jun 01, 2022
<p>فائل فوٹو</p>

فائل فوٹو

پاکستان میں پولیو کا ایک اور کیسز رپورٹ ہوگیا، شمالی وزیرستان سے تعلق رکھنے والی 7 ماہ کی بچی کو بیماری نے عمر بھر کیلئے معذور کردیا۔

محکمہ صحت کی جانب سے اعلامیے میں بتایا گیا ہے کہ رواں برس پاکستان سے پولیو کیسز کی مجموعی تعداد 7 ہوگئی، تمام کیسز بکہ شمالی وزیرستان سے رپورٹ ہوئے، تحصیل میر علی سے کیسز کی تعداد 6 ہوگئی۔

رپورٹ کے مطابق پولیو سے بچی کی معذوری 2 مئی کو رپورٹ ہوئی تھی، ابتدائی تحقیقات سے پتہ چلا ہے کہ بچی کے بائیں بازو اور دونوں ٹانگیں مفلوج ہوگئی ہیں۔

وزیرستان میں 27 مئی کو بھی 2 بچوں کے پولیو وائرس سے معذور ہونے کی تصدیق ہوئی تھی۔

وفاقی وزیر صحت عبدالقادر پٹیل کا کہنا ہے کہ شمالی وزیرستان میں 2014ء اور 2019ء کی طرز پر دوبارہ پولیو کی وباء پھوٹ پڑی ہے، اُس دوران بھی پولیو کیسز تواتر سے رپورٹ ہورہے تھے، ہم اس وباء کے خاتمے کیلئے انتھک کوششیں کررہے ہیں۔

مزید پڑھیے: وزیرستان میں دو بچوں میں پولیو وائرس کی تصدیق

محکمہ صحت نے خیبرپختونخوا کے جنوبی اضلاع بشمول شمالی و جنوبی وزیرستان، ڈی آئی خان، بنوں، ٹانک اور لکی مروت کو پولیو وائرس کیلئے حساس قرار دیا ہے۔

بنوں سے رواں سال اپریل اور مئی کے 2 ماحولیاتی نمونوں سے وائرس کی تصدیق ہوئی جو اس بات کی تائید ہے کہ پولیو وائرس کا پھیلاؤ شمالی وزیرستان تک محدود نہیں ہے۔

وفاقی وزیر صحت کا اپنے بیان میں مزید کہنا ہے کہ اگرچہ کیسز ملک کے ایک ہی علاقے سے رپورٹ ہورہے ہیں تاہم تمام والدین اپنے بچوں کو پولیو وائرس سے بچاؤ کیلئے قطرے ضرور پلوائیں۔

کوآرڈینیٹر قومی ایمرجنسی آپریشنز سینٹر ڈاکٹر شہزاد بیگ نے کہا ہے کہ وائرس کی روک تھام کیلئے خیبرپختونخوا کے جنوبی علاقوں میں آمد و رفت کے دوران 10 سال تک کے تمام بچوں کو پولیو ویکسین پلائی جارہی ہے۔

تمام کیسز شمالی وزیرستان سے رپورٹ ہورہے ہیں، جس کی وجوہات انکاری والدین اور قطرے پیئے بغیر بچوں کی انگلیوں پر جعلی نشانات لگانا ہے۔

دنیا بھر میں اس سال صرف دو ممالک پاکستان اور افغانستان سے پولیو کیسز رپورٹ ہوئے ہیں، پاکستان میں 7 جبکہ اور ایک کیس افغانستان سے جنوری میں رپورٹ ہوا تھا۔

پاکستان

polio

polio campaign

Tabool ads will show in this div