شر پسند یہودی مسجد اقصیٰ کے کمپاؤنڈ میں جاگھسے

احتجاج کرنے پر درجنوں فلسطینی گرفتار، متعدد زخمی
May 29, 2022
<p>مقبوضہ بیت المقدس: یہودی آباد کاراسرائیلی پرثم اٹھائے مارچ کررہے ہیں</p>

مقبوضہ بیت المقدس: یہودی آباد کاراسرائیلی پرثم اٹھائے مارچ کررہے ہیں

شر پسند یہودیوں کے جتھے نے مسجد اقصیٰ کے کمپاؤنڈ پر دھاوا بول دیا۔

غیر ملکی خبر ایجنسی کے مطابق سیکڑوں یہودیوں پر مشتمل جتھہ اسرائیلی پرچموں کے ساتھ مارچ کرتے ہوئے مسجد اقصیٰ کے احاطے میں داخل ہوگیا جس کے نتیجے میں شہر میں کشیدگی ایک مرتبہ پھر بڑھ گئی ہے۔

مارچ کی قیادت ایک سخت گیر صیہونی جماعت کا لیڈر ایتامر بن گیور کررہا تھا، اس موقع پر مقبوضہ بیت المقدس میں تین ہزار سے زائد اسرائیلی اہلکاروں کو تعینات کیا گیا۔

اسرائیلی فورسز نے فلسطینی صحافیوں کو بھی مسجد اقصیٰ میں داخل ہونے کی اجازت نہیں دی اور انہیں گرفتار کرنے کی دھمکیاں دی گئیں۔

یہودی آبادکاروں کے مارچ کے موقع پر فلسطینیوں نے شدید احتجاج کیا جن پر اسرائیلی فورسز کی جانب سے ربڑ کی گولیاں برسائی گئیں۔

اسرائیلی پولیس نے احتجاج کرنے والے 18 فلسطینیوں کی گرفتاری کی تصدیق کی ہے۔

فلسطینی ریڈ کریسنٹ سوسائٹی نے اپنے بیان میں بتایا کہ یہودی آبادکاروں نے الواد میں زخمیوں تک پہنچنے کی کوشش کرنے والی ایک ایمبولینس پر حملہ بھی کیا۔

فلسطینی اتھارٹی کے ترجمان ابو رودیناہ کے مطابق اسرائیل خود کو بین الاقوامی قوانین سے بالاتر سمجھتا ہے اور نہ ہی ان کا احترام کرنا جانتا ہے۔ اسرائیل یہودی آبادکاروں کو امن و امان خراب کرنے کی کھلی چھوٹ دے کر آگ سے کھیلنے کی کشش کررہا ہے۔

انہوں نے عالمی برادری بالخصوص امریکا پر زور دیا کہ وہ اپنی ذمہ داریوں کو محسوس کریں اور دوہرے رویے نہ اپنائیں۔

Aqsa

Israel-Palestine conflict

Tabool ads will show in this div