مصالحتی نظام کو مزید فعال بنانے کی ضرورت ہے، چیف جسٹس

بین الاقوامی ثالثی پر عدالتی نکتہ نظر پر کانفرنس سے خطاب
May 27, 2022

چیف جسٹس عمرعطاء بندیال کا کہنا ہے کہ مصالحتی نظام کے طریقہ کار کو مزید فعال بنانے کی ضرورت ہے۔

لاہور میں ملکی اور بین الاقوامی ثالثی پر عدالتی نکتہ نظر پر کانفرنس سے ویڈیو لنک خطاب میں چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ ہم ضروری اقدامات کرکے ثالثی کے نظام کو کامیاب بناسکتے ہیں، ثالثی کے نظام کو کامیاب بنانے کیلئے جامع کوششوں کی ضرورت ہے۔

جسٹس عمرعطاءبندیال کا کہنا تھا کہ کانفرنس میں کمرشل کورٹس،مصالحتی عدالتوں کے فوائد پر بات کی گئی، عدالتوں میں آنیوالے سائلین کیلئے آگاہی مہم چلانے کی ضرورت ہے۔

کانفرنس سے خطاب میں جسٹس منصورعلی شاہ کا کہنا تھا کہ پاکستان بھر میں جائیداد کے20 لاکھ کيسز زیرسماعت ہیں جبکہ ملک میں 4 ہزار سے زائد ججزعدالتوں میں کام کررہے ہیں۔

جسٹس منصورعلی شاہ کا کہنا تھا کہ ہرجج کے پاس تقریباً 3 ہزار کیسز زیرسماعت ہيں، سول کورٹ سے سپریم کورٹ تک کیسز ایک سے دوسری نسل کو منتقل ہورہے ہیں۔

یاد رہے کہ بین الاقوامی کانفرنس میں سپریم کورٹ کے ججوں سمیت دنیا بھر سے جج صاحبان شریک ہیں، کانفرنس میں تمام ججز رولز آف لاء کے حوالے سے اپنے تجربات شیئرکریں گے۔

SupremeCourt

CJJP

Tabool ads will show in this div