ڈاکٹر یاسمین راشد کے دفتر پر پولیس کاچھاپہ

ڈاکٹر یاسمین راشد دفتر میں موجود تھیں

لاہور پولیس سابق صوبائی وزیر ڈاکٹر یاسمین راشد کے دفتر میں داخل ہوگئی۔ یاسمین راشد کا کہنا ہےکہ یہ کچھ بھی کرلیں عوام کا سمندر روک نہیں سکتے۔

پاکستان تحریک انصاف کا ‘حقیقی آزادی مارچ’ روکنے کیلئے اتحادی حکومت نے کارروائیاں شروع کردی، لاہور سمیت پنجاب کے مختلف شہروں میں پی ٹی آئی رہنماؤں اور کارکنوں کے گھروں اور دفاتر پر پولیس کے چھاپے جاری ہیں۔

مزید جانیے: تحریک انصاف کو لانگ مارچ کی اجازت نہ دینے کا اعلان

لاہور پولیس کی بھاری نفری سابق صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد کے دفتر میں داخل ہوگئی، دفتر کی تلاشی لی، پولیس کی نفری کافی دیر ڈاکٹر یاسمین راشد کے دفتر میں موجود رہی۔

ڈاکٹر یاسمین راشد نے اپنے دفتر میں ایک پریس کانفرنس کی تھی، جس کے بعد پولیس نے ان کے دفتر کو چاروں اطراف سے گھیرے میں لے لیا، یاسمین راشد خود بھی اپنے دفتر میں موجود ہیں۔

پولیس سے جب پوچھا گیا کہ بار بار چھاپے کیوں مارے جارہے ہیں تو ایس ایچ او نے کہا کہ ہم صرف تلاشی کیلئے آرہے ہیں، کیا کرنا بعد میں بتائیں گے۔

سماء سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے ڈاکٹر یاسمین راشد کا کہنا ہے کہ گرفتاری سے ڈر نہیں لگتا، پولیس گردی عوام ہرگز برداشت نہیں کریں گے، یہ کچھ بھی کرلیں عوام کا سمندر روک نہیں سکتے، ایک جم غفیر باہر نکلے گا۔

ڈاکٹر یاسمین راشد نے لاہور میں کانسٹیبل کے شہید ہونے پر دکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مجھے بہت تکلیف اور افسوس ہے۔

لاہور

Yasmin Rashid

Tabool ads will show in this div