سعودی عرب میں پہلی مرتبہ صرف خواتین پر مشتمل عملے کی پرواز

سٹاف میں زیادہ تر خواتین سعودی شہریت کے حامل تھیں،حکام

سعودی عرب کی ایک مقامی ایئرلائن نے ملک میں پہلی اندرون ملک پرواز کی ہے جس کا مکمل سٹاف خواتین پر مشتمل تھا۔

ہفتہ کو ایئرلائن کے آفیشل ٹوئٹر اکاؤنٹ پر یہ اعلان کیا گیا کہ سعودی ایوی ایشن کی تاریخ میں پہلی بار فلائی ادیل نے اپنی پرواز تمام خواتین سٹاف کے ساتھ چلائی ہے۔ سٹاف میں زیادہ تر خواتین سعودی شہریت کے حامل تھیں۔

جدید ترین طیارے کے ذریعے یہ تاریخی فلائٹ سعودی شہر ریاض سے جدہ کے لیے چلائی گئی۔

سات خواتین کے عملے کے ساتھ فلائی ادیل کی فلائٹ میں 23 سالہ یارا جان شریک پائلٹ کی حیثیت سے موجود تھیں جو سب سے کم عمر سعودی خاتون پائلٹ بھی ہیں۔

اس موقع پر یارا جان نے بتایا ہے کہ وہ ہوا بازی کے اس تاریخی لمحے میں سعودی خواتین کے لیے بہت فخر محسوس کر رہی ہیں۔

عرب میڈیا کی رپورٹ کے مطابق سعودی میں خواتین نے زندگی کے بہت سے ایسے شعبوں میں خود کو منوا لیا ہے جہاں طویل عرصے سے مردوں کی اجارہ داری رہی ہے اب ان میں ہوابازی سے متعلق شعبہ بھی شامل ہو گیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق سعودی خواتین پائلٹوں کی تعداد میں حال ہی میں اضافہ ہوا ہے جن میں تین نام نمایاں ہیں۔

ksa

SAUDIA ARABIA

First All-Female Crew Flight

Tabool ads will show in this div