بھارت:مسلمان ہونے کے شک پر انتہاپسندوں کے ہاتھوں بزرگ شہری ہلاک

تشدد سے ہلاک شخص کی شناخت بھنور لعل جین کے نام سے ہوئی،پولیس

انڈین ریاست مدھیہ پردیش میں حکمران جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی کے رکن کے مبینہ تشدد سے ایک بزرگ شہری ہلاک ہوگیا ہے۔

ہفتہ کو سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی ویڈیو میں لال رنگ کی قمیض پہنے ہوئے ایک شخص ایک بزرگ کو تھپڑ مارتے ہوئے دیکھا جاسکتا ہے۔

انڈین میڈیا کے مطابق ویڈیو میں بزرگ شہری سے تشدد کرنے والا شخص بی جے پی سے تعلق رکھنے والا ایک سابق کونسلر ہے جس کا نام دنیش کشواہا ہے۔

جائے وقوعہ سے بعد میں تشدد کا نشانہ بننے والے شہری کی لاش برآمد ہوئی تھی جن کی شناخت بھنور لعل جین کے نام سے ہوئی اور ان کے خاندان کے مطابق وہ ذہنی مریض تھے۔

مقامی پولیس کا کہنا ہے کہ ان کے پاس اس بات کو کوئی ثبوت نہیں کہ جواہر لعل جین کو مسلمان ہونے کے شک پر تشدد کا تشانہ بنایا گیا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ کشواہا بزرگ کا صحیح نام معلوم کررہے تھے کیونکہ شاید انہوں نے سوچا ہو کہ رات کے اس پہر ان کے محلے میں بیٹھا ہوا یہ شخص مشکوک ہے۔

انڈین ذرائع ابلاغ کے مطابق یہ ویڈیو دراصل جمعرات کی ہے اور اسی رات جواہر لعل جین مردہ حالت میں پائے گئے تھے۔ یہ ویڈیو واٹس ایپ گروپوں میں شیئر بھی خود کشواہا ہی نے کی تھی۔

پولیس کا کہنا ہے کہ 38 سالہ دنیش کشواہا کے خلاف دفعہ 302 کے تحت مقدمہ کا اندراج کرلیا گیا اور اسے گرفتار بھی کرلیا گیا ہے۔

indian

senior citizen dies

Varda May 22, 2022 08:26pm
Wah bht khob astagfirrullah
Tabool ads will show in this div