عالمگیر خان پر ریاستی اداروں کیخلاف اشتعال انگیزی کا مقدمہ

مقدمہ ایس ایچ او تھانہ گلشن اقبال اشرف جوگی مدعیت میں درج کیا گیا

کراچی میں پاکستان تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی عالمگیر خان پر ریاستی اداروں کے خلاف اشتعال انگیزی کا مقدمہ درج کیا گیا ہے۔

کراچی کے تھانہ گلشن اقبال میں عالمگیر خان کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا ہے۔

عالمگیر خان کے خلاف مقدمہ ایس ایچ او تھانہ گلشن اقبال اشرف جوگی مدعیت میں درج کیا گیا ہے، ایف آئی آر میں ریاست اور ریاستی اداروں کی تضحیک کرتے ہوئے اشتعال انگیزی پھیلانے اور دیگر دفعات شامل کی گئی ہیں۔

ایف آئی آر کے مطابق گلشن اقبال بلاک 6 میں دیوار پر وال چاکنگ کی گئی جس کے ذریعے ملک کے اداروں کی کردار کشی کی گئی ہے، اس کے علاوہ سوشل میڈیا پر اس حوالے سے ایک ویڈیو بھی شیئر کی گئی ہے، جس میں وال چاکنگ کے ہمراہ عالمگیر خان اور دیگر افراد ساتھ ہیں۔

مقدمے میں کہا گیا کہ وال چاکنگ اوروڈیوکامقصد بظاہراداروں کےخلاف اشتعال انگیزی،بے یقینی اورمایوسی پھیلانا تھا۔

پولیس نے ہفتے کی علی الصبح عالمگیر خان کی رہائش گاہ پر چھاپہ بھی مارا تھا لیکن وہ گھر پرموجود نہیں تھے، پولیس کا کہنا تھا کہ ملزم کو جلد گرفتار کرلیا جائے گا۔

دوسری جانب پی ٹی آئی کے رہنماؤں نے واقعے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ پی ٹی آئی ارکان اسمبلی کو ہراساں کیاجارہا ہے، مرادعلی شاہ کےحکم پرپولیس عوامی نمائندوں کو گرفتار کرنا چاہتی ہے، پولیس پیپلز پارٹی کی غلامی سے باز رہے۔

عالمگیر خان رکن قومی اسمبلی کے علاوہ سماجی کارکن کے طور پر بھی جانے جاتے ہیں، وہ حکومت کی بد انتظامی اور بنیادی سہولیات کی عدم فراہمی پر آواز بلند کرتے ہیں، ان کی سماجی تنظیم فکس اٹ کے نام سے فعال ہے۔

alamgir khan

Tabool ads will show in this div