قومی اسمبلی میں تنقید برائے اصلاح کے تحت ایشوزاجاگرکریں گے،راجہ ریاض

بطوراپوزیشن لیڈر اپنا مثبت کردار ادا کروں گا

قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر راجہ ریاض نے کہا ہے کہ قومی اسمبلی میں تنقید برائے اصلاح کے تحت ایشوز کواجاگرکیا جائے گا۔

قومی اسمبلی میں نامزد اپوزیشن لیڈر راجہ ریاض نے سماء سے ٹیلی فونک گفتگو میں بتایا کہ بطوراپوزیشن لیڈر اپنا مثبت کردار ادا کروں گا اور پارلیمنٹ میں تنقید برائے تنقید نہیں بلکہ تنقید برائے اصلاح کے تحت ایشوز کواجاگرکیا جائے گا۔

راجہ ریاض نے واضح کیا کہ قومی اسمبلی کے ایوان میں دیگر اپوزیشن ارکان کو ساتھ لےکرچلا جائے گا کیوں کہ ملک اس وقت اہم ترین قومی اورعوامی مسائل سےدوچار ہے۔

راجہ ریاض کا کہنا تھا کہ ایوان میں اپوزیشن اپنا ذمہ دارانہ کردارادا کرے گی کیوں کہ پوری قوم کوملکی صورتحال کا احساس ہے اور ایسے میں تمام محب وطن حلقوں کو اپنا کردار ادا کرنا ہے۔

واضح رہے کہ جمعہ 20 مئی کو اسپیکر قومی اسمبلی راجا پرویز اشرف نے تحریک انصاف کے ناراض رکن اسمبلی راجہ ریاض کو قائد حزب اختلاف مقرر کیا تھا۔

قومی اسمبلی میں 16 اراکین نے راجا ریاض کی بطور اپوزیشن لیڈر حمایت کی اوراسپیکر قومی اسمبلی نے حکمنامے پردستخط کردیے۔

اس سے قبل ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی نے جمعہ کے دن دو بجے تک اپوزیشن لیڈر کے لیے حامی ارکان کے دستخطوں سے درخواستیں طلب کی تھیں۔

راجہ ریاض نے 16 اراکین قومی اسمبلی جبکہ جی ڈی اے کے غوث بخش مہر نے 6 اراکین کے دستخط سے قومی اسمبلی سیکرٹریٹ میں درخواستیں جمع کرائی تھیں۔

درخواستوں کی اسکروٹنی کا عمل مکمل ہونے کے بعد قومی اسمبلی سیکریٹریٹ نے راجہ ریاض کی تقرری کا نوٹیفیکیشن جاری کردیا۔اعلامیےکےمطابق راجہ ریاض کواسمبلی رولز کے رول 39 کے تحت اپوزیشن لیڈر مقرر کیا گیا۔

واضح رہے کہ سابق وزیراعظم عمران خان کیخلاف تحریک عدم اعتماد کے کامیابی بعد تحریک انصاف کی جانب سے بڑی تعداد میں استعفے دینے کے اعلان کے بعد قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف کی نشست خالی تھی۔

تحریک انصاف کے 123 مستعفی اراکین کےعلاوہ 20 منحرف اراکین اس وقت بھی قومی اسمبلی میں موجود ہیں جنہوں نے عمران خان کےخلاف تحریک عدم اعتماد کے وقت متحدہ اپوزیشن کا ساتھ دیا تھا۔

Raja riaz

Tabool ads will show in this div