افغانستان : طالبان کو ایک سے زائد شادیاں نہ کرنے کی ہدایت

طالبان سربراہ نے فیصلہ مالی بوجھ کم کرنے کیلئے کیا

افغان طالبان کے سربراہ ملا ہبت اللہ کی جانب سے ایک تازہ فرمان جاری کیا گیا ہے جس میں طالبان جنگجوو اور رہنماوں کو ایک سے زائد شادیوں سے گریز کی ہدایت کی ہے۔

ملا ہبت اللہ کی جانب سے طالبان حکومت کے وزارت امر بالمعروف والنهی عن المنكر کے حکام کو ہدایت پر عملدرآمد کی ہدایت کی گئی ہے۔

فرمان میں امارت اسلامیہ کے ارکان کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ دو، تین یا چار شادیوں سے گریز کریں جو کہ غیر ضروری اور مہنگی ہیں۔

فرمان کے مطابق ایسی کسی بھی صورت میں دوسری شادی کرنے والا براہ راست اپنے امیر سے اس شادی کی اجازت طلب کرے گا۔

واضح رہے کہ اس سے قبل 15 جنوری کو بھی ملا ہبت اللہ کی جانب سے طالبان حکام کو اس قسم کی ہدایت کی گئی تھی۔ طالبان سربراہ کی جانب سے کہا گیا تھا کہ کہ وہ زیادہ شادیاں نہ کریں کیونکہ یہ دشمن کی جانب سے ہمارے خلاف پراپیگنڈے کا سبب بنتا ہے۔

فرمان میں ایک سے زائد شادیوں پر پابندی عائد نہیں کی گئی تھی مگر اس میں خبردار کیا گیا ہے کہ شادیوں کی رسم میں زیادہ رقم خرچ ہوتی ہے جو دشمن کی طرف سے پروپیگنڈے کا سبب بنتی ہے۔

فرمان کے مطابق اگر قیادت اور کمانڈرز زیادہ شادیاں نہ کریں تو وہ اس طرح کی بدعنوانی اور غیر قانونی رسوم میں پڑنے سے بچ جائیں گے۔

جنوری میں جاری فرمان میں کہا گیا تھا کہ ایسے مرد زیادہ شادیاں کر سکتے ہیں جن کی پہلی بیویوں سے اولاد نہیں ہے یا کوئی اولاد نرینہ نہیں ہے۔ ایسے افراد کو بھی دوسری شادی کی اجازت ہے جو بیوہ سے شادی کریں یا ایسے افراد زیادہ شادیاں کر سکتے ہیں جو وسائل رکھتے ہوں۔

AFGHAN TALIBAN

Tabool ads will show in this div