مارگلہ آتشزدگی کا مقدمہ درج، ٹک ٹاک بھی میدان میں آگیا

مارگلہ ہلز ميں درختوں کو آگ لگانے کامقدمہ درج
May 18, 2022

ویڈیو شیئرنگ ایپ ٹک ٹاک نے چند ٹک ٹاکرز کی جانب سے مارگلہ ہلز نیشنل پارک میں آگ لگا کر ویڈیو بنانے کے واقعے پر بیان جاری کیا ہے۔ ترجمان ٹک ٹاک کا کہنا ہے کہ خطرناک مواد یا غیر قانونی رویے کی تشہیر پلیٹ فارم کی کمیونٹی گائیڈ لائنز کی خلاف ورزی ہے۔ ترجمان کا مزید کہنا تھا کہ مذکورہ ویڈیوز کو پلیٹ فارم سے ہٹا دیا گیا ہے۔ پلیٹ فارم پر غیر قانونی اور خطرناک سرگرمیوں کے لیے کوئی جگہ نہیں ہے۔ بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ ہم ہر کسی کو اپنے رویے میں احتیاط اور ذمہ داری کا مظاہرہ کرنے کی ترغیب دیتے ہیں۔ دوسری جانب شہراقتدار کا ترقیاتی ادارہ اور پولیس جنگلات دشمن ٹک ٹاکرز کے خلاف حرکت میں آ گئے اور مارگلہ ہلز نیشنل پارک میں درختوں کو آگ لگاکر ٹک ٹاک ویڈیو بنانے والی ماڈل اور اس کے ساتھیوں کے خلاف مقدمہ درج کرلیا گیا۔ سوشل میڈیا پر شہرت کی بھوک مٹانے کی خاطر اسلام آباد کے جنگل کو آگ لگانے والے ٹک ٹاکر ماڈل ڈولی اور اس کے ساتھی ٹک ٹاکرز کے خلاف ایف آئی آر شعبہ ماحولیات کی مدعیت میں کاٹی گئی۔ ایف آئی آر میں کہا گیا ہے کہ ماڈل ڈولی نے جنگل میں آگ لگا کر ٹک ٹاک ویڈیو بنائی، ٹک ٹاکرز کیخلاف تحفظ ماحولیات ، فارسٹ ایکٹ اور دیگر متعلقہ دفعات کے تحت قانونی کارروائی کی جائے۔ سی ڈی اے کے شعبہ ماحولیات اور وائلڈ لائف بورڈ کی جانب سے بطور ثبوت پیش کی گئی ٹک ٹاک ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ چار لڑکوں نے جنگل میں آگ لگائی پھر ماڈل ڈولی نے ویڈیو شوٹ کی۔ مقدمہ میں نامزد ٹک ٹاکر اصغر نے واقعہ میں ملوث ہونے کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس نے نہ جنگل کو آگ لگائی اور نہ ہی ویڈیو بناتے وقت جنگل کو کسی قسم کا نقصان پہنچا۔

وفاقی وزیر شیری رحمان کا نوٹس

وفاقی وزیر ماحولیاتی تبدیلی شیری رحمان نے واقعہ کے مذمت کرتے ہوئے کہا کہ میں نے جنگلات میں ٹک ٹاکرز کی جانب سے لگنے والی آگ کے واقعات کا نوٹس لیا ہے۔

شیری رحمان کا مزید کہنا تھا کہ معاملہ ابھی زیر تفتیش ہے لیکن آگ کے واقعات اسلام آباد میں نہیں خیبر پختونخوا میں ہوئے ہیں تاہم ملوث مجرموں کو سخت ترین سزا ملنی چاہیے۔ وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ اسلام آباد میں ایسے واقعات سے بچنے اور ریسکیو کے لئے ہم نے سی ڈی اے اور آئی ڈبلیو ایم بی کو کنٹرول روم بنانے کا کہا ہے۔ جلد ہیلپ لائن کا بھی اعلان کیا جائے گا۔

واقعہ کا پس مںظر خیال رہے کہ گزشتہ دنوں مارگلہ کے پہاڑوں میں بھڑکتی آگ کسی اور نے نہیں بلکہ ٹک ٹاکرز نے لگائی تھی، ٹک ٹاکرز مارگلہ ہلز نیشنل پارک میں آگ لگا کر ویڈیو بناتے رہے۔ وائلڈ لائف بورڈ نے ملوث 4 لڑکوں کی نشاندہی کرلی تھی جن میں سے پولیس نے ایک کو ایبٹ آباد سے گرفتار کرلیا ہے جبکہ باقیوں کی گرفتاری کیلئے کوششیں جاری ہیں۔ مارگلز ہلز نیشنل پارک میں کچھ روز کے دوران آگ لگنے کے کئی واقعات رونما ہوچکے ہیں، جس کے باعث پودوں، درختوں اور چرند پرند کو نقصان پہنچا۔

TIKTOK

Tabool ads will show in this div