وفاقی کابینہ نے بیسویں ترمیم کے مسودے کی منظوری دیدی

اسٹاف رپورٹر
اسلام آباد: وفاقی کابینہ نے بیس ویں آئینی ترمیم کے مسودے کی منظوری دے دی ہے۔ مسودے ميں اپوزيشن کی تراميم کو شامل کرليا گيا ہے۔
اس آئينی ترميم کا مقصد اٹھائیس منتخب نمائندوں کو تحفظ دینا ہے ۔۔ یہ ترمیم آج قومی اسمبلی کے اجلاس ميں پيش کئے جانے کا امکان ہے۔
وزیراعظم گیلانی کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس اسلام آباد میں ہوا۔ اجلاس ميں بيسویں آئينی ترميم کا مسودہ پيش کيا گيا،جسے کابينہ نے منظور کرليا۔
مسودے ميں معطل اٹھائیس اراکین پارلیمنٹ کو آئینی تحفظ دینے کی تجویز بھی دی گئی ہے۔
ذرائع کے مطابق نگراں سیٹ اپ پر اپوزیشن لیڈر اور وزیراعظم کے درمیان اتفاق نہ ہونے پر پارلیمانی کمیٹی قائم کی جائے گی۔ کمیٹی تین دن میں کوئی فیصلہ نہ کرے تو معاملہ الیکشن کمیشن کے پاس جائے گا۔ کابينہ نے الیکشن کمیشن کے ارکان کی مدت پانچ سال کرنے کی تجویز دی ہے۔
کابینہ نے وزیراعظم کی قیادت پر بھرپور اعتماد کا اظہار کیا ۔۔اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ادارے اپنی حدود میں رہیں گے تو کوئی تصادم نہیں ہوگا۔انہوں نے کہا کہ ان کی نیت خراب نہیں ہے۔۔ اس لئے سب کو ساتھ لے کر چل رہے ہیں۔

کی

کے

نے

promise

Tabool ads will show in this div