سندھ سے سينٹ کي نشستوں پر پیپلز پارٹی اور ايم کيو ايم کے درمیان سیٹ ایڈجسمينٹ ہوگئی

Nov 30, -0001

اسٹاف رپورٹر


سندھ سے سينٹ کي نشستوں پر پیپلز پارٹی اور ايم کيو ايم کے درمیان سیٹ ایڈجسمينٹ ہوگئی ہے ۔۔ بارہ نشستوں میں سے سات پیپلز پارٹی ، چار ایم کیوایم اور ایک نشست فنکشنل لیگ کو ملے گی۔


سینیٹ الیکشن کے لئے ایم کیو ایم سے سیٹ ایڈجسمنٹ پراتفاق رائے کے بعد پیپلز پارٹی کے نومیں دو امیدواردستبردارہوجائیں گے۔۔ سیٹ ایڈجسمنٹ کے مطابق سندھ سے پی پی کو سات ، متحدہ قومی موومنٹ کو چاراورفنکشنل مسلم لیگ کو ایک نشست ملے گی۔


 پہلے مرحلے میں پی پی کے ڈاکٹرکریم خواجہ نے ٹیکنوکریٹ کی نشست پر کاغذات نامزدگی واپس لے لئے ہیں ۔۔ دوسرے مرحلے میں جمعرات کو پیپلزپارٹی کے امیدوارراشد ربانی اورخواتین امیدوار سحر کامران یا شاہدہ رحمانی میں سے ایک اپنی نشست سے دستبردارہوجائیں گی۔


 اتحادی جماعتوں کے امیدواروں کو بلامقابلہ منتخب کرانے کے لئے پیپلز پارٹی کے رہنماء ہم خیال گروپ کے امیدوارغفار قریشی کو دستبردار کرانے کے لئے مذاکرات  کررہے ہیں۔


 غفار قریشی دستبردار نہ بھی ہوئے تب بھی اتحادی امیدوار کامیاب ہوجائیں گےکیونکہ  ہم خیال گروپ کی سندھ اسمبلی میں صرف چارنستیں جبکہ سینیٹ امیدوار کو کامیاب کرانے کے لئے 21 ارکان کی حمایت درکار ہوتی ہے۔


 سندھ میں سینیٹ کے انتخابی معرکے میں پیپلز پارٹی کی ٹیکنوکریٹ سیٹ پر ڈاکٹر حفیظ شیخ ۔ اقلیتی نشست پر ہرام رام کشوری لال ۔ جنرل سیٹ پر عاجز دھامرہ ۔ سعید غنی ۔ میاں رضاربانی ۔ ڈاکٹر کریم خواجہ رہ جائیں گے جبکہ خواتین کی نشست شاہدہ رحمانی یا سحرکامران کو ملے گی۔


 ایک جنرل سیٹ فنکشنل لیگ کے مظفر حسین شاہ کو دی گئی ہے ۔۔ ایم کیو ایم کو دی گئی چار نشستوں کے لئے ٹیکنو کریٹ سیٹ پر بیرسٹر فروغ نسیم ۔ خواتین کی نشست پر نسرین جلیل ۔۔ جبکہ جنرل نشست پرمصطفی کمال اور کنور نوید جمیل امیدوار ہونگے۔ سماء

اور

کے

پر

سے

Burns Road

دسترخوان

سندھ

Tabool ads will show in this div