پناہ گزینوں سے متعلق معاہدے کے فروغ کیلئے میرکل ترکی میں

German Chancellor Merkel gestures during a joint news conference with Turkish Prime Minister Davutoglu in Ankara

انقرہ: جرمن چانسلر انگیلا میرکل یورپی یونین کے اعلی حکام کے ہمراہ ترکی میں قائم شامی پناہ گزینوں کے ایک کیمپ کا دورہ کررہی ہیں جرمن چانسلر کے اس دورے کا مقصد شامی سرحد سے ملحقہ علاقے غازیان ٹیپ میں پناہ گزینوں کی صورتحال سے آگاہ ہونا ہے۔

بظاہر وہ یہ دیکھنے جا رہی ہیں کہ وہاں پناہ گزین کس حال میں رہ رہے ہیں لیکن بی بی سی کے نامہ نگار کا کہنا ہے کہ وہ پناہ گزینوں کے بحران کے حوالے سے یورپی یونین اور ترکی کے درمیان ہونے والے معاہدے کو بھی فروغ دیں گے۔

اقوامِ متحدہ میں اس معاہدے کی قانونی حیثیت کے حوالے سے سوال اٹھائے گئے ہیں۔ جبکہ انسانی حقوق کے گروہوں کا کہنا ہے کہ ترکی پناہ گزینوں کی واپسی کے لیے محفوظ جگہ نہیں ہے۔

Migrants sit after disembarking from a merchant ship in the Sicilian harbour of Augusta

مارچ میں ترکی نے ایک معاہدے پر اتفاق کیا تھا جس کے مطابق ترکی یونان پہنچنے والے پناہ گزینوں کو واپس بلا لے گا جس کے بدلے اسے یورپی یونین کی امداد ملے گی اور اس کے شہریوں کے لیے ویزے کی پابندی ختم کی جائے گی۔

اس دورے میں امکان ہے کہ انگیلا میرکل ترکی وزیرِ اعظم سے ویزا فری سفر سے متعلق بات چیت کریں۔ ترک وزیرِ اعظم نے خبردار کیا تھا کہ اگر ویزے کے معاملے پر کوئی پیش رفت نہ دکھائی گئی تو وہ معاہدہ ختم کر دیں گے۔ سماء/اے پی پی

German chancellor

EU migrant deal

Greek islands

International Organization for Migration

Prime Minister Ahmet Davutoglu

EU funding for refugees

Tabool ads will show in this div