صدر ممنون حسین کی ترک وزیراعظم سے ملاقات

Turk-Pak-PM-meeting

استنبول: صدر مملکت ممنون حسین اور ترک وزیراعظم احمد داود اولو نے دونوں برادر ممالک کے درمیان دفاع، معیشت، توانائی، انفراسٹرکچر، سائنس و ٹیکنالوجی سمیت متعدد شعبوں میں تعاون پر اتفاق کیا ہے۔

پاکستان اور ترکی کے درمیان یہ اتفاق رائے اسلامی تعاون تنظیم کے 13 ویں اجلاس کے موقع پر جمعرات کو ملاقات میں سامنے آیا۔ دونوں رہنماوں نے اس عزم کا بھی اظہار کیا کہ انتہاء پسندی ایک بڑا خطرہ ہے جس سے نمٹنے کیلئے مشترکہ حکمت عملی کی ضرورت ہے۔ اس سلسلے میں اسلامی ممالک کو بات چیت کے ذریعے اپنے اختلافات ختم کرنے چاہیئے۔

مزید پڑھیں؛ او آئی سی کا اجلاس ترکی میں شروع

دونوں رہنماوں نے کہا کہ پاکستان اور ترکی کے انتہائی پرجوش برادرانہ تعلقات ہیں جو دیگر قوموں کے لئے مثال کی حیثیت رکھتے ہیں جن میں مزید وسعت پیدا کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ عالمی اور علاقائی امور میں دونوں ملکوں کے درمیان مکمل اتفاق رائے ہے اور وہ بین الاقوامی فورموں پر ایک دوسرے کے ساتھ بھرپور تعاون کرتے ہیں۔

Turkish-PM,-Mamnoon

صدر مملکت نے اوآئی سی کشمیر رابطہ گروپ میں فعال کردار پر ترکی کا شکریہ ادا کیا۔ دونوں رہنماوں نے اس امر پر بھی اتفاق ظاہر کیا کہ دونوں ملکوں کے درمیان تجارت صلاحیت سے کم ہے، مستقبل میں اس میں مزید اضافہ کیا جائے گا۔

صدر ممنون حسین نے کہا کہ ترک سرمایہ کار پاکستان میں توانائی، انفراسٹرکچر کی تعمیر اور دیگر شعبوں میں سرمایہ کاری کرسکتے ہیں۔ ترک وزیر اعظم نے انہیں یقین دلایا کہ اس سلسلے میں وہ متعلقہ حکام کو ہدایات دیں گے۔ صدر مملکت نے پرجوش استقبال پر وزیر اعظم اولو اور ان کی حکومت کا شکریہ ادا کیا۔ سماء/اے پی پی

president mamnoon hussain

turkish PM

science and technology

Ahmet Davutoglu

Tabool ads will show in this div