او آئی سی کا اجلاس ترکی میں شروع

OIC-Summit

استنبول: ترکی کے شہر استنبول میں اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) کا 13واں اجلاس شروع ہوگیا ہے۔ یہ اجلاس 14سے 15اپریل کو ترکی کی میزبانی میں منعقد ہو رہا ہے۔

صدر مملکت ممنون حسین نے جمعرات کو افتتاحی نشست میں مسلم دنیا کے راہنماﺅں کے ہمراہ شرکت کی۔ افتتاحی نشست میں او آئی سی ممالک سے کم و بیش 30 سربراہان مملکت و حکومت شریک ہوئے، جس سے ترکی کے صدر رجب طیب اردوان ، مصر کے وزیر خارجہ سامعے شوکری اور اوآئی سی کے سیکرٹری جنرل ایاد امین مدنی نے خطاب کیا۔

مزید پڑھیں؛ صدر ممنون حسین کی ترک وزیراعظم سے ملاقات

نشست کے آغاز میں تیرھویں اسلامی سربراہ کانفرنس کی صدارت بارہویں اسلامی سمٹ کے صدر مصر سے ترکی کے سپرد کی گئی۔ قبل ازیں سربراہ کانفرنس کے مقام استنبول کانگریس سینٹر آمد پر ترک صدر رجب طیب اردوان نے صدر پاکستان ممنون حسین کا پرتباک خیر مقدم کیا۔ صدر مملکت فیملی فوٹو ایونٹ میں بھی اوآئی سی رکن ممالک کے رہنماﺅں کے ہمراہ شریک ہوئے۔

صدر رجب طیب اردوان نے اپنے جامع خطاب میں امت مسلمہ کو درپیش چیلنجوں بالخصوص دہشتگردی، انتہاپسندی جیسے مسائل کو اجاگر کیا اور دنیا میں امن کے لئے اس لعنت سے نمٹنے کے لئے مشترکہ حکمت عملی کے ذریعے مل کر کوششیں کرنے پر زور دیا۔ انہوں نے پوری اسلامی دنیا کے فائدے کے لئے تجارت، معیشت، سائنس، ٹیکنالوجی، صحت، تعلیم سمیت مختلف شعبوں میں او آئی سی کے رکن ممالک کے درمیان تعاون پر زور دیا۔

Mamnoon,-Erdogan

سربراہ اجلاس کے دوران اسلامی دنیا کے رہنما مشترکہ اقدام کے فروغ، علاقائی اور بین الاقوامی سطح پر او آئی سی کے کردار کو اجاگر کرنے کے لئے اہم فیصلے اور عملی اقدامات کریں گے جس میں او آئی سی کا پروگرام 2016-2025 بھی شامل ہے جو خصوصی ترجیحات کے ساتھ اسٹریٹجک وژن پر مشتمل ہے۔

اس پروگرام کا مقصد او آٰئی سی کے رکن ممالک میں امن و سلامتی کے ایشوز کو حل کرنا، انتہاپسندی و دہشتگردی کا خاتمہ، انسانی فلاحی کام، انسانی حقوق، ترقی، غربت کا خاتمہ، وبائی امراض کا خاتمہ، خواتین اوربچوں کے حقوق اور فیملی پلاننگ سمیت اعلیٰ تعلیم، سائنس و ٹیکنالوجی، ثقافتی تبادلہ ہے، اسلامی سربراہ اجلاس کا موضوع انصاف اور امن کے لئے اتحاد و یکجہتی ہے۔

اجلاس میں شام، یمن، لیبیا، افغانستان، صومالیہ، مالی، جموں و کشمیر، بوسینیا ہرزیگوینا کی موجودہ صورتحال کا جائزہ لینا اور آذربائیجان پر آرمینیا کی جارحیت اور رکن ممالک کو درپیش تنازعات اور غیرمستحکم سکیورٹی صورتحال پر بھی غوروخوص ہو گا۔

استنبول سربراہ اجلاس میں او آئی سی سے باہر دیگر ممالک میں مسلمانوں کی صورتحال اور دہشتگردی کے خاتمے کا بھی جائزہ لیا جائے گا۔ اجلاس میں رکن ممالک کے درمیان پائیدار ترقی، سائنسی تعاون کا فروغ، صحت، اعلیٰ تعلیم، ماحولیات، ثقافتی، سماجی و میڈیا کے شعبوںمیں تعاون، انسانی صورتحال، غربت کا خاتمہ اور انفراسٹرکچر کی ترقی پر بھی غور ہو گا۔ سماء/ایجنسی

MAMNOON HUSSAIN

turkish president

OIC Summit

Islamic countries

Tabool ads will show in this div