سینیٹ میں لاپتہ افراد کی بازیابی کے لئے قرارداد منظور

Nov 30, -0001

اسٹاف رپورٹ

اسلام آباد: سینیٹ نے لاپتہ افراد کی جلد بازیابی کی قرارداد متفقہ طور پر منظور کر لی ہے۔

لاپتہ افراد کی بازیابی کی قرارداد جماعت اسلامی کے پروفیسر خورشید نے پیش کی۔ قرارداد میں کہا گیا ہے کہ سینیٹ لاپتہ افراد کے معاملے پر گہری تشویش کا اظہار کرتا ہے اور یہ آئین کے آرٹیکل نو اور دس کی صریحاً  خلاف ورزی ہے۔

قرارداد میں کہا گیا ہے کہ دہشتگردی اور تخریب کاری ناقابل معافی جرم ہے لیکن جب تک کوئی شخص قانونی کارروائی کے مطابق قصوروار ثابت نہیں ہوتا، اس وقت تک وہ بے گناہ ہے،

ایک مہذب معاشرے میں کسی بی شخص کا اغوا، جبری طور پر غائب کرنا، بزور طاقت اٹھانا غیر قانونی اور ناقابل برداشت ہے۔

قرارداد کے مطابق ایسی صورتحال سے ملک میں اور خصوصاً کراچی، بلوچستان اور فاٹا میں سنگین اثرات مرتب ہو رہے ہیں، سینیٹ اس عزم اعادہ کرتا ہے کہ وفاقی اور صوبائی حکومتوں کو چاہیے کہ وہ لاپتہ افراد کی فوری بازیابی اور رہائی کیلئے مؤثر اقدامات اٹھائیں، سوائے ان افراد کے جو کسی بھی جرم میں زیر حراست ہیں اور ان کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی  ہو رہی ہے۔

قرارداد میں کہا گیا ہے کہ سینیٹ یہ بھی مطالبہ کرتا ہے کہ  لاپتہ افراد کے حوالے سے تفصیلی رپورٹ ایوان میں پیش کی جائے۔ سماء

میں

کی

کے

MQM

bail

myanmar

hails

Tabool ads will show in this div