توہین عدالت کیس، سپریم کورٹ نے بابر اعوان کیخلاف فیصلہ سنادیا

Nov 30, -0001

اسٹاف رپورٹ
اسلام آباد : سپریم کورٹ نے توہین عدالت کیس میں بابر اعوان کے خلاف فیصلہ سنا دیا۔ سپریم کورٹ کے مطابق بابر اعوان کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی کی جائے گی۔

سماعت کے دوران چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ یکم دسمبرکی پریس کانفرنس میں عدالت عظمیٰ سے متعلق توہین آمیز مواد موجود ہے۔ جس پر سابق وفاقی وزیر قانون پر20 مارچ کو بابر اعوان پر فرد جرم عائد کی جائے گی۔

واضح رہے کہ سپریم کورٹ کے بینج نے مقدمے کی ابتدائی سماعت یکم مارچ کو مکمل کرلی تھی۔ جس پر آج فیصلہ سنایا گیا ہے۔ کیس کی ابتداء یکم دسمبر 2011 کو شروع ہوئی۔


جب بابر اعوان نے تین وفاقی وزراء کے ساتھ ججز کے خلاف پریس کانفرس کی۔ حکومتی پریس کانفرنس کے نتیجے میں عدالت عظمیٰ نے بابر اعوان کو طلب کرلیا۔

کیس کی سماعت کیلئے جسٹس اعجاز افضل خان اور جسٹس اطہرسعید پر مشتمل دو رکنی بینچ بنایا گیا۔13  جنوری کو طلبی پر بابراعوان پیش نہ ہوئے تو انہیں اظہار وجوہ کا نوٹس جاری کیا گیا،


جب کہ اس روز بھی بابراعوان کی جانب سے سپریم کورٹ کے احاطے میں پھر الفاظ کی فن کاریاں دیکھائی گئیں جس پر ان کو توہین عدالت کا ایک اور نوٹس دیئے


ہوئے 13 فروری کو کو دوبارہ عدالت میں طلب کیا گیا۔ سماعت کے دوران بابر اعوان کی وکالت کا لائسنس بھی منسوخ کیا گیا۔ عدالت میں بابر اعوان کی پریس کانفرنس کی فوٹیج بھی دکھائی گئی۔ سماء

نے

فیصلہ

افغانستان

کیخلاف

Tabool ads will show in this div