عدلیہ،مقننہ،حکومت محاذآرائی کاشکارہیں،مشرف کاامریکی تھنک ٹینک سےخطاب

اسٹاف رپورٹ
نیویارک : اقتدار سے علیحدگی کے کئی برس بعد اب پرویز مشرف کا کہنا ہے کہ موجودہ حالات میں ریاست کے تمام ستونوں کو متفقہ سوچ اختیار کرنی چاہئے۔ انہیں موقع ملا تو ملکی حالات بہتر بناسکتے ہیں۔
 
سابق صدر پرویز مشرف نے ایک بار پھر پاکستان کے ریاستی اداروں میں محاذ آرائی کا دعوی کیا ہے۔ نیویارک میں امریکی تھنک ٹینک سے خطاب میں پرویز مشرف نے کہا کہ  موجودہ حالات میں ریاست کے تمام ستونوں کو متفقہ سوچ اختیار کرنی چاہیئے۔ انہوں نے کہا کہ وہ فوجی آدمی ہیں اور پاکستان کے حالات بہتر بناسکتے ہیں۔

پاکستان میں اس وقت عدلیہ مقننہ اور حکومت محاذ آرائی کا شکار ہیں۔ ان کے درمیان متفقہ سوچ اور عمل کا فقدان ہے جس کی موجودہ حالات میں ضروت ہے اس لئے میں فوجی آدمی ہونے کی وجہ سے ان حالات میں مثبت کردار ادا کرکے حالات بہتر بناسکتا ہوں۔

سابق صدر کا کہنا تھا کہ رابطوں کا فقدان امریکا سے اختلافات کی وجہ ہے۔ امریکا اور پاکستان کے درمیان اختلافات رابطوں کے فقدان کی وجہ سے ہیں۔ پرویز مشرف کے مطابق ان کے دور میں ایسا نہیں ہوتا تھا  کیونکہ صدر بش اور کولن پاؤل سے ان کے خصوصی مراسم تھے جس سے اختلافات اور غلط فہمیاں دور کرنے میں مدد ملتی تھیں۔

حقانی نیٹ ورک کے خلاف کارروائی کے سوال پر پرویز مشرف کا کہنا تھا کہ سراج حقانی اور ملا عمر اگر سرحد پار کرکے کارروائیاں کرتے ہیں تو امریکا اور افغان فورسز انہیں کیوں نہیں روکتیں۔ مشترکہ دشمن کے خلاف امریکا اور افغان حکومت کو بھی اپنی ذمہ داریاں پوری کرنی چاہیئیں۔سماء/ایجنسیز

florida

office

mosques

verdict

Tabool ads will show in this div