اصغرخان پٹیشن کی سماعت آج بھی جاری،اسلم بیگ آج بیان حلفی جمع کرائیں گے

اسٹاف رپورٹ
اسلام آباد : آئی ایس آئی کی جانب سے سیاست دانوں میں رقم تقسیم کرنے سے متعلق اصغر خان پٹیشن کی سماعت آج بھی سپریم کورٹ میں جاری ہے۔


ایئر مارشل ریٹائرڈ اصغر خان، سابق آرمی چیف اسلم بیگ اور  سیکریٹری کیبینٹ نرگس سیٹھی بھی سپریم کورٹ پہنچ گئیں۔

کیس کی سماعت چیف جسٹس کی سربراہی میں تین رکنی بنچ کررہا ہے۔ سابق آرمی چیف مرزا اسلم بیگ آج اصغر خان کیس میں بیان حلفی جمع کرائیں گے۔


کيس ميں گزشتہ روز ہونے والی سماعت ميں مہران بینک اسکينڈل کے مرکزی کردار اور سابق سربراہ بینک يونس حبيب نے کہا


ہے کہ 1990ء ميں آئی جے آئی کی تشکيل کيلئے  رقوم کی تقسيم آئی ايس آئی اور يوسف ايڈووکيٹ نامی شخص نے کی تھی۔

يونس حبيب نے ميڈيا سے گفت گو ميں کہا کہ انہوں نے نوازشريف کو 35 لاکھ روپے دیئے تھے ،شہباز شريف کو 25 لاکھ روپے دیئے۔ واضح رہے


کہ گزشتہ روز مہران بینک کے سابق صدر یونس حبیب نےعدالت سے غیرمشروط معافی مانگتے ہوئے کہا تھا


کہ اس وقت کے آرمی چیف اسلم بیگ اور صدر غلام اسحق خان کے کہنے پر سیاستدانوں میں رقم تقسیم کی۔ مجھے دوران حراست اسلم بیگ نے کہا کہ 35 سے 40 کروڑ کا انتظام کرنے کو کہا ۔

روئیداد خان نے مجھ پر دباؤ ڈالا کہ آصف علی زرداری کے خلاف مقدمہ کرو۔ انہوں نے کہا کہ میرے پاس صدر اور آرمی چیف کا حکم ماننے کے لیے علاوہ کوئی چارہ نہیں تھا۔


کرنل اکبر نے رقم دینے کے لیے اکاؤنٹس نمبر بتائے۔جنرل اسلم بیگ نے میری صدر اسحق سے ملاقات کا انتظام کیا۔جنرل اسلم بیگ نے قومی مفاد کے نام پر انتخابات کے لیے رقم مانگی۔ سماء

کی

آج

بیان

reforms

games

quebec

ISPR

Tabool ads will show in this div