پاناما لیکس؛ بیرون ملک شریف خاندان کی جائیدادیں

SHARIF FAMILY PKG 04-04 IRSHAD

[video width="640" height="360" mp4="http://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2016/04/SHARIF-FAMILY-PKG-04-04-IRSHAD.mp4"][/video]

اسلام آباد:پاناما پیپرز کے لیک ہونے سے دولت بیرون ملک چھپانےوالوں میں بڑے بڑے نام سامنے آئے ہیں۔ بیس پاکستانیوں میں نوازشریف کے دونوں بیٹے ،مریم صفدر،دو سینیٹرز اور دو معروف وکلاء بھی شامل ہیں۔ شریف خاندان نے برطانیہ ميں چار کمپنياں قائم کیں اور لندن کے ہائيڈ پارک ميں تقريباً چھ مہنگي ترين جائيداديں حسن نواز، حسین نواز اور مریم نواز شریف کی ملکيت ہيں ۔

مريم صفدرنيلسن انٹرپرائزز لميٹڈ اور نيسکول لميٹڈ کي مالک ہیں جبکہ حسن نواز ہينگون پراپرٹي ہولڈنگز لميٹڈ کےڈائريکٹرتھے۔

مزیدپڑھیے: پاناما لیکس سے عالمی سیاست میں تہلکہ مچ گیا

پاناما پیپرز کےمطابق شريف خاندان نےمزيد دو اپارٹمنٹس  کي خريداري کےليے ستر لاکھ برطانوي پاؤنڈ قرض کےعوض چارجائيداديں ڈچ بينک اور بينک آف اسکاٹ لينڈ کےپاس گروي رکھي ہيں ۔

نوازشريف کےتينوں بچے مختلف کمپنيوں کے مالک اور ٹرانزيکشن کا اختياررکھتے ہیں۔ 1993 ميں مريم صفدر برٹش ورجن آئي لينڈ ميں نيلسن انٹرپرائزز لميٹڈ اور نيسکول لميٹڈ کي مالک تھيں۔

مزید پڑھیے: موساک فونسیکا کیا ہے؟

حسين نواز اور مريم  نواز شریف نے جون 2007 ميں اپني کمپنيوں کےليے ڈچ بينک سے ايک کروڑ اڑتيس لاکھ ڈالرکا قرض حاصل کيا اور اس کےليےمشترکہ طور پرايک دستاويز پردستخط کيے۔

حس نواز ہينگون پراپرٹي ہولڈنگز لميٹڈ کےڈائريکٹررہ چکے ہیں جس نےاگست دوہزار سات ميں لائيبريا کي فرم کيسکون ہولڈنگز اسٹبلشمنٹ لميٹڈ کو ايک کروڑ بارہ لاکھ ڈالر ميں حاصل کيا۔ سماء

SHARIF FAMILY

MARYAM NAWAZ SHARIF

Panama leaks

hussain nawaz

hassan nawaz

hide park

Tabool ads will show in this div