گارمنٹس کی عالمی منڈی پاکستان کے ہاتھ سے نکلنے کا خطرہ

Nov 30, -0001

اسٹاف رپورٹ

کراچی: پاکستان کی گارمنٹس برآمدات دوراہے پر کھڑی ہے، اگر حکومت نے سنجیدہ اقدامات نہ کیے تو خطے میں جاری مقابلے کی دوڑ کے باعث عالمی منڈیوں کو کھو دیں گے۔

یہ بات شہزاد سلیم چیئرمین پاکستان ریڈی میڈ گارمنٹس مینو فیکچررز اینڈ ایکسپوٹرز ایسوسی ایشن نے یونائیٹڈ نیشن ڈیولپمنٹ پروگرام اور پاکستان ریڈی میڈ گارمنٹس ٹیکنیکل ٹریننگ انسٹیٹیوٹ کے اشتراک سے شروع کیے جانے والے جین پروم پروگرام کے تحت ماسٹر ٹرینرز سرٹیفکیٹ تقسیم کرنے کے حوالے سے منعقدہ تقریب سے بطور مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے کہی۔

انہوں نے کہا کہ مناسب معاشی پالیسی کے نہ ہونے سے موجودہ منظر نامے میں برآمد کنندگان کو متعدد مسائل کا سامنا کرنا پڑرہا ہے جن میں خصوصی طور پر بجلی کا بحران، پھنسے ہوئے ریفنڈ کلیمز، سہولیات کو واپس لینا اور دیگر مسائل ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ اس وقت مجموعی طور پر ٹیکسٹائل سیکٹر اور خصوصاً گارمنٹس سیکٹر شدید ترین مشکلات سے دوچار ہے۔ گارمنٹس سیکٹر پہلے ہی 800 ملین ڈالر مالیت کے غیر ملکی آرڈرز سے ہاتھ دھو بیٹھا ہے۔ اس کے علاوہ اس شعبے کو رواں سال کے دوران برآمدات میں 25 فیصد کمی کا سامنا ہے۔ اگر حکومت نے اس صورحال کا سنجیدگی سے جائزہ نہ لیا اور پھنسے ہوئے ریفنڈز کو ریلیز نہ کیا تو خدشہ ہے کہ گارمنٹس سیکٹر کی برآمدات مزید کم ہوجائیں گی۔

شہزاد سلیم نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ جی ایس پی پلس کے حصول کیلئے یورپین یونین کے ممبرز کے درمیان مضبوط لابنگ کرنے کیلئے اقدامات کریں۔ سماء

کی

کے

کا

سے

CII

rights

tajikistan

georgia

identity

Tabool ads will show in this div