گلشن کو کون بچائے گا ؟

Lahore-blast

تحریر: محمد قربان

سفاک دہشت گردوں نے ہنستا بستا گلشن اجاڑ ديا۔ لاہور کے جس پرسکون باغ ميں بچوں کے قہقے سنائی دیتے تھے اب وہاں خوف کے سائے ہيں۔ بزدل دہشت گردوں نے معصوم لوگوں کي جانيں لينے کے لئے ايک آسان ہدف کا انتخاب کيا اور تباہي کي ناقابل فراموش داستان رقم کردي۔ ساٹھ ايکڑ سے زائد رقبے پر پھيلے گلشن اقبال پارک ميں ہونے والي بدترين دہشت گردي نے پچھتر سے زيادہ افراد کي جان  لے لي جبکہ سينکڑوں اسپتالوں ميں زندگي اور موت کي جنگ لڑرہے ہیں۔ صوبے ميں علاج معالجے کي کتني سہولتيں دستياب ہيں اس کا پول بھي کھل گیا۔ خون ميں لت پت زخميوں کو لٹانے کے لئے بيڈ تک نہيں تھے۔

lahore-blast-2

بدترين دہشت گردي کے بعد صوبے ميں موجود دہشت گردوں کو کيفرکردار تک پہنچانے کا فيصلہ کيا گيا اور يہ فيصلہ آرمي چيف جنرل راحيل شريف کي زير صدارت ايک اجلاس ميں ہوا۔ فوج ايک قدم آگے بڑھ کر عوام کے تحفظ کے لئے سخت اقدامات کے لئے متحرک ہوئي تو حکومت نے انتہائي بھونڈے طريقے سے اس آپريشن کا سہرا اپنے سر سجانے کي کوشش کي ليکن بات نہ بن سکي اور دہشت گردوں کے خلاف پنجاب ميں کارروائي کا آغاز کرديا گيا۔

Lahore-blast-3

ہمارے حکمران يہ راگ الاپتے تھکتے نہيں کہ حکومت اور فوج ايک پيج پر ہيں۔ ارے بھائي اگر آپ فوج کے ساتھ ہو تو انہيں کام کرنے دو اس ميں روڑے اٹکانے يا اپنے نمبر بنانے کي کيا ضرورت ہے۔ اسلام آباد ميں را کے گرفتار آفیسر کے کارناموں سے ميڈيا کو آگاہ کرنے کے لئے جو پريس کانفرنس منعقد ہوئي اس ميں پاک فوج کے ترجمان کے ساتھ وفاقي وزير اطلاعات بھي موجود تھے۔ محترم وزير را آفیسر کی ويڈيو تک تو انتہائي پرسکون  نظر آئے ليکن جیسے ہی وہاں موجود صحافيوں نے پنجاب ميں آپريشن کا سوال داغا تو يہاں  وزير موصوف نے يہ کہہ کر آپريشن کا کريڈٹ اپنے کھاتے ميں ڈالنے کي کوشش کي کہ کسي بھي صوبے ميں آپريشن کا فيصلہ وہاں کي صوبائي حکومت کرتي ہے۔

Lahore-blast-4

ليکن جنرل صاحب نے فوري طور پراس کي وضاحت بھي کردي اور کسي کا نام لئے بغير وزير صاحب کي معلومات ميں يہ کہہ کر اضافہ کرديا کہ جس وقت ہم يہاں بيٹھے ميڈيا سے بات کر رہے ہيں اس وقت بھي پنجاب کے کئي اضلاع ميں آپريشن ہورہا ہے۔ اس بات سے سمجھنے والے ايک لمحے ميں سمجھ گئے کہ يہ آپريشن کس کي ہدايت پرہورہا ہے۔

جنرل صاحب کي وضاحت کے بعد وزير صاحب اتنے بدمزہ ہوئے کہ منہ ہي دوسري طرف کرکے بيٹھ گئے اور جو نہيں جانتے تھے انہيں بھي بتاديا کہ حکومت کس پيج پر ہے۔ لاہور واقعہ کے بعد ہر کسي کي نظريں فوج کي طرف  اٹھي ہيں کہ ايک گلشن تو اجڑ گيا لیکن اب مزيد گلشن اجڑنے سے بچا لئے جائيں۔

INFORMATION MINISTER

general raheel sharif

lahore blast

Gulshan e Iqbal park

Army Operation in Punjab

Gen Asim Bajwa

Tabool ads will show in this div