امریکی فوجی جنرل افغان عوام سے معافی کے طلبگار

56f18b2ec3618819268b45ae کابل :  امریکی جنرل جان نکہولسن کا کہنا ہے کہ وہ قندوز واقعہ پر افغان عوام سے معافی چاہتے ہیں۔ غیر ملکی خبر رساں ایجنسی بی بی سی کے مطابق افغانستان میں تعینات امریکا اور نیٹو کی افواج کے نئے کمانڈر نے افغان شہر قندوز میں بین الاقوامی امدادی تنظیم ایم ایس ایف کے اسپتال پر بمباری میں ہونے والی ہلاکتوں پر مغذرت کی ہے۔ نیٹو نے اپنے اعلامیے میں کہا ہے کہ منگل کو جنرل جان نکہولسن نے قندوز کا دورہ کیا اور انہوں نے ایم ایس ایف کے اراکین اور متاثرہ خاندانوں سے ملاقات کے دوان اپنی غلطی پر ان سے معافی مانگی۔ نیٹو اور امریکی افواج کے کمانڈر نے کہا ہے کہ وہ سمجھتے ہیں کہ ذاتی طور پر یہاں آ کر معافی مانگنا بہت ضروری ہے۔ یہاں یہ بات قابل غور ہے کہ "امریکی جنرل کی معذرت ایک ایسے وقت پر سامنے آئی ہے، جب گزشتہ ہفتے امریکی حکام کی جانب سے یہ بیان جاری کیا گیا تھا کہ قندوز حملے میں شامل فوجیوں کے خلاف مجرمانہ کارروائی کے بجائے انتظامی کارروائی کی جائے گی۔ واضح رہے کہ گزشتہ سال اکتوبر میں امریکی افواج نے افغانستان میں قائم بین الاقوامی امدادی تنظیم ایم ایس ایف کے اسپتال پر بمباری کی تھی، جس سے ڈاکٹر، مریضوں اور طبی عملے سمیت 42 افراد ہلاک ہوئے تھے۔ تفتیش سے یہ بات ظاہر ہوئی تھی کہ گن شپ جہاز اے سی 130 کے عملے نے اسپتال کو ایک ایسی سرکاری عمارت کے دھوکے میں نشانہ بنایا، جس پر افغان طالبان نے قبضہ کر رکھا تھا۔ سماء

APOLOGY

NATO

Kunduz city

US Commander

Medecins Sans Frontieres

Tabool ads will show in this div