لیاری گینگ وار گروپوں میں تصادم،فائرنگ اور بم حملوں میں15افراد جاں بحق،25زخمی

کراچی : لیاری کے علاقے جھٹ پٹ مارکیٹ میں دستی بم حملوں اور فائرنگ سے جاں بحق ہونے والوں کی تعداد 15 ہوگئی، جب کہ دھماکوں اور فائرنگ سے 25 سے زائد افراد زخمی بھی ہوئے،  پولیس کے مطابق ہلاک ہونے والوں میں آٹھ خواتین اور تین بچیاں بھی شامل ہیں۔

لیاری میں ایک بار پھر مسلح گروپوں کے درمیان تصادم نے خونی شکل اختیار کرلی۔ لیاری میں علی الصبح دن کا آغاز ایک بار پھر دھماکوں اور گولیوں کی آوازوں سے ہوا۔ گینگ وار کے گروپوں کے درمیان تازہ تصادم میں  جاں بحق افراد کی تعداد پندرہ  تک جا پہنچی ہے، جب کہ فائرنگ اور بم حملوں میں اب تک کی اطلاعات کے مطابق 25 سے زائد افراد زخمی ہوئے۔ مرنے والوں میں تین کم سن بچیاں اور آٹھ خواتین بھی شامل ہیں۔
 
پولیس کے مطابق لیاری کی جھٹ پٹ مارکیٹ، گل محمد لین اور بزنجو چوک میں گینگ وار کے گروپوں کی جانب سے دستی بم پھینکے گئے، جس سے قریب سے گزرنے والی تین بچیاں، آٹھ  راہ گیر خواتین سمیت 15 افراد  ہلاک اور25  سے زائد زخمی ہوئے۔ زخمی ہونے والوں میں اسکول جانے والی بچیاں بھی شامل ہیں۔

 

علاقہ مکینوں کے مطابق علاقے میں وقفے وقفے سے  فائرنگ کا سلسلہ اب بھی جاری ہے، جب کہ قانون نافذ کرنے والے ادارے صورت حال قابو کرنے کیلئے جائے وقوعہ پر دیر سے  پہنچیں۔شدید  فائرنگ کے باعث علاقے میں ایمبولینس اور  امدادی ٹیمیوں کو بھی داخلے میں دشواری کا  رہا۔

 

پولیس کا کہنا ہے کہ کم وزن کے باوجود آوان بم زوردار بم دھماکے سے پھٹتا ہے، سی آئی ڈی کے سربراہ راجہ عمر خطاب کے مطابق  آوان دستی بم روسی ساختہ ہے، جو اسمگل کرکے کراچی لایا جا رہا ہے۔ فی بم کی قیمت پانچ ہزار سے آٹھ ہزار کے درمیان ہے۔ سماء

KESC

Killed

universities

Tabool ads will show in this div