طالبان کاجنگ بندی میں توسیع کیلئےقیدیوں کی رہائی،امن زون کامطالبہ

اسٹاف رپورٹ
پشاور : کالعدم طالبان شوریٰ نے مذاکراتی کمیٹی سے رابطے کے بعد شوریٰ کے فیصلوں سے آگاہ کردیا، کالعدم طالبان نے اس بات کا مطالبہ کیا ہے جنگ بندی میں توسیع کیلئے قیدیوں کی رہائی اور شکتوئی کو امن زون بنایا جائے، جب کہ کالعدم طالبان شوریٰ کا یہ بھی مطالبہ سامنے آیا ہے کہ حکومت دونوں شرائط کی منظوری کی تحریری ضمانت بھی دے۔

طالبان کے دو بنیادی مطالبات پرحکومت کا ردعمل کیا ہوگا اس کا فیصلہ آج حکومتی اورطالبان کی مذاکراتی کمیٹوں کے اجلاس میں ہوجائے گا، دونوں کمیٹیوں کے ارکان آج دوبارہ سرجوڑ کربیٹھیں گے جس میں مستقبل کا لائحہ عمل طے کیا جائے گا۔

طالبان کے براہ راست مذاکرات کے بعد دونوں کمیٹیوں کے ارکان کی بیٹھک آج اسلام آباد میں ہورہی ہے جس میں طالبان کی جانب سے جنگ بندی میں توسیع کےلئے پیش کی جانے والی شرائط اوراس کے بارے حکومتی ردعمل پرغورکیا جائے گا ۔ طالبان مذاکراتی کمیٹی کے رکن پروفیسرابراہیم کا کہنا ہے کہ مذاکرات کا ایجنڈا امن کی بحالی ہی ہے، جس کےلیے دونوں فریقین نے ایک دوسرے کوشرائط پیش کردی ہیں۔

طالبان کمیٹی مذاکرات کی کامیابی کےلئے پرامید ہے، پروفیسر ابراہیم کا یہ بھی کہنا ہے کہ فریقین میں اعتماد کی بحالی کا آغاز ہوچکا ہے توقع ہے کہ کم عرصے میں اہم کامیابی مل جائے گی۔

آج دونوں کمیٹیوں کی ملاقات میں ہونے والے فیصلے ہی براہ راست مذاکرات کی اگلی منزل کا تعین کرسکیں گے۔ سماء

ahmadinejad

money laundering

Tabool ads will show in this div