تحفظ بل کے بعد پنجاب کے شوہروں پر رونا آرہا ہے

لاہور : مولانا فضل الرحمان کا کہنا ہے کہ خواتین تحفظ بل کے بعد پنجاب کے شوہروں پر رونا آرہا ہے، اب سمجھ آیا کہ شہباز شریف خود کو خادم اعلیٰ کیوں کہتے ہیں۔ صوبائی اسمبلی پنجاب میں خواتین کے تحفظ سے متعلق بل کیا پیش ہوا، گویا مولانا فضل الرحمان کی نیندیں اڑ گئی، ہر گزرتے دن کے ساتھ مولانا کا بل کی مخالفت میں تازہ کلام آئے روز خبروں کی زینت بنتا جا رہا ہے۔ کبھی اس کو اسلام مخالف بل کہنا تو کبھی مردوں کے خلاف، العرض مولانا کو کسی کروٹ چین نہیں۔ ایسا ہی کچھ اسلام آباد میں میڈیا نمائندوں سے گفت گو میں ہوا، جہاں جمعیت علماء اسلام ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان بل کے خلاف اپنے بھڑکتے جذبات پھر قابو نہ کرسکے اور پنجاب میں منظور ہونے والے تحفظ خواتین بل پر برس پڑے اور کہا کہ بل کی منظوری کے بعد پنجاب کے شوہروں پر رونا آرہا ہے، اگر عورت تھانے چلی گئی تو پھر طلاق ہی ہوگی۔ مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ ہم سوچتے تھے کہ وزیراعلیٰ پنجاب خود کو خادم اعلیٰ کیوں کہلاتے ہیں، مگر اب پتا چل گیا کہ وہ گھر میں خادم اعلیٰ ہیں، جس کی وجہ سے وہ باہر بھی خود کو خادم اعلیٰ کہلواتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تحفظ خواتین بل پر مجھے کوئی برہمی نہیں ہے، تاہم پنجاب کے شوہروں کی قسمت پر رونا آرہا ہے کہ اب ان کا کیا ہوگا۔ سماء

JUIF

PUNJAB ASSEMBLY

Maulana Fazal ur Rehman

Women Protection Bill

Assualt

Tabool ads will show in this div