پرانے ڈیزائن کے تمام بینک نوٹوں کی قانونی حیثیت ختم کرنے کا فیصلہ

2071493436_ee270892ac_b کراچی : وفاقی حکومت کی جانب سے چار جون 2015ءکو جاری کردہ گزٹ نوٹی فکیشن کے مطابق یکم دسمبر 2016ءسے پرانے ڈیزائن کے بینک نوٹوں کی قانونی حیثیت ختم ہو جائے گی۔ مرکزی بینک کی جانب سے جاری کردہ اعلامیہ کے مطابق پانچ روپے کے نوٹ اور پرانے ڈیزائن کے پانچ سو روپے کے نوٹ کی قانونی حیثیت پہلے ہی ختم ہو چکی ہے۔ یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ بینک دولت پاکستان نے نئے ڈیزائن کے بینک نوٹ کی سیریز جاری کی تھی، جس کا آغاز سال دو ہزار پندرہ میں بیس روپے مالیت کے بینک نوٹ کے اجراء سے ہوا تھا اور اس کا مقصد بینک نوٹوں کی سیکیورٹی، پائیداری اور جمالیاتی معیار میں بہتری لانا تھا۔ آٹھ مختلف مالیتوں پر مشتمل نئے ڈیزائن کے بینک نوٹوں کی مکمل سیریز (پانچ روپے، دس روپے، بیس روپے، پچاس روپے، پانچ سو روپے، ہزار روپے اور پانچ ہزار روپے ) کے اجرا کا عمل سال دو ہزار آٹھ میں مکمل ہوا تھا۔ کمرشل اور مائیکرو فنانس بینک تیس نومبر سال دو ہزار سولہ تک دس، سو، پچاس اور ہزار روپے کے پرانے ڈیزائن کے بینک نوٹوں کی وصولی اور ان تمام مالیتوں کا اتنی ہی مالیت کے نئے ڈیزائن کے بینک نوٹوں اور سکوں سے تبادلہ جاری رکھیں گے، تاہم ایس بی پی بی ایس سی کے فیلڈ دفاتر  اکتیس دسمبر دو ہزار اکیس تک عوام سے  دس، سو، پچاس اور ہزار روپے کے پرانے ڈیزائن کے بینک نوٹ قبول کرتے رہیں گے۔ بینکوں میں پرانے ڈیزائن کے تمام نوٹوں کے تبادلے کا آخری دن تیس نومبر دو ہزار سولہ ء ہے، پرانے ڈیزائن کے تمام نوٹوں کی قانونی حیثیت یکم دسمبر دو ہزار سولہ ء سے ختم ہو جائے گی، جب کہ ایسے تمام بینک نوٹوں کے ایس بی پی بی ای سی کے فیلڈ دفاتر سے تبادلے کا آخری دن اکتیس دسمبر دو ہزار اکیس ءہے۔ سماء

NEW CURRENCY

COINS

Old Currency Note

SBPBEC

Tabool ads will show in this div