عزیر بلوچ کے سنسنی خیز انکشافات منظر عام پر آگئے

کراچی : عزیر بلوچ بالآخر بول پڑا، تحقیقات میں سنسنی خیز انکشافات سامنے آئے ہیں، لیاری کے مشہور گینگسٹر نے ایران کی خفیہ ایجنسی کیلئے کام کرنے، کالعدم تنظیموں کے رہنماؤں کو لیاری میں پناہ دینے کا بھی اعتراف کرلیا، کہتا ہے کہ پی پی قیادت کے کہنے پر خالد شہنشاہ کو قتل کیا، پولیس اہلکاروں نے ارشد پپو کو پکڑ کر میرے حوالے کیا تھا۔

سماء تہلکہ نے عزیز بلوچ سے تحقیقات کی اہم معلومات حاصل کرلیں، پیپلز امن کمیٹی کے سربراہ کے سنسنی خیز انکشافات منظر عام پر آنے لگے، ملزم نے اعتراف کیا ہے کہ ایران کی خفیہ ایجنسی کیلئے بھی کام کرتا رہا ہوں، بلوچستان میں حالات خراب کرنے کیلئے پڑوسی ملک کی ایجنسی نے استعمال کیا، ایران کا پاسپورٹ لیکر دبئی گیا جہاں پی پی قیادت نے مجھ سے رابطہ کیا، دبئی پولیس نے پکڑا تو ایران نے کسٹڈی لینے کیلئے بہت زور لگایا۔

عزیر بلوچ نے بتایا کہ بلوچستان کے علیحدگی پسند رہنماؤں کو لیاری میں پناہ بھی دی، ڈاکٹر اللہ نذر بلوچ کو بھی کچھ دن لیاری میں رکھا گیا، بلوچستان کے 5 سردار اسلحہ اور روپوشی میں مدد کرتے تھے۔

لیاری کے گینگسٹر نے انکشاف کیا کہ بلال شیخ اور خالد شہنشاہ کو پیپلزپارٹی قیادت نے مجھ سے قتل کرایا، خالد شہنشاہ کو معلوم تھا اسے قتل کردیا جائے گا، انہوں نے بلاول ہاؤس سے نکلنا بند کردیا تھا مگر انہیں زبردستی بلاول ہاؤس سے باہر بھیجا گیا، پی پی قیادت نے رحمان ڈکیت کو ایران سے بلاکر پولیس کے حوالے کیا۔

عزیر بلوچ کہتا ہے کہ فریال تالپور، ذوالفقار مرزا، نبیل گبول، شاہجہاں بلوچ اور شرمیلا فاروقی بھی رابطے میں تھے، لیاری کے پولیس والے میری مرضی سے تعینات ہوتے تھے، ارشد پپو کو پولیس نے پکڑکر میرے حوالے کیا تھا۔ سماء

GANG WAR

TARGET KILLER

Uzair Balooch

SAMAA Tehalka

Tabool ads will show in this div