امریکاکی بے گھراورخوراک کی کمی کاشکارپاکستانیوں کےلیےامداد

Jan 27, 2016

11

   اسلام آباد:امریکی حکومت نے وفاق کے زیر انتظام قبائلی علاقوں (فاٹا) کے عارضی طور پر بے گھر ہونے والے تقریباً 12  لاکھ افراد،  75 ہزار متاثرین زلزلہ اور پاکستان میں غذائیت کی کمی کاشکار ایک لاکھ 53 ہزار 5 سو خواتین اور بچوں کو خوراک کی فراہمی میں معاونت کے لئے یو ایڈکے ذریعے 2کروڑ ڈالر فراہم کئے ہیں۔

          یہ امداد اقوام متحدہ کے ادارے ڈبلیو ایف پی کے زیر انتظام  فراہم کی جائے گی، جو حکومت پاکستان کی جانب سے فراہم کردہ تقریباً 40 ہزارمیٹرک ٹن گندم کو غذائیت سے بھرپور مقوی آٹے میں تبدیل کرے گا۔ اس کے علاوہ، ڈبلیو ایف پی ان افراد کو غذائیت کی فراہمی کے لئے 9 ہزار میٹرک ٹن سے زائد خصوصی غذائی اشیاء تقسیم کرے گا۔

22

         یو ایس ایڈ کے مشن ڈائریکٹر جان گرورک نے کہا کہ امریکی حکومت غذائیت کی کمی کے خطرے کاشکار عورتوں، مردوں اور بچوں کی محفوظ اور غذائیت سے بھرپور خوراک تک رسائی کو بہتر بنانے کے لئے پاکستان کی مدد کررہی ہے۔  انہوں نے کہا کہ امریکہ انسانی ہمدردی کی بنیادپر امداد اور انسانی ترقی میں معاونت کے لئے پاکستان کے ساتھ دیرپا بنیاد وں پر کام کرنے کے لئے پُرعزم ہے۔

         یو ایس ایڈ کی 20 ملین ڈالر کی یہ اعانت "ٹوئیننگ پروگرام" کے لئے فراہم کی جانے والی رقم کا حصہ ہے جو حکومت پاکستان، ڈبلیو ایف پی اور بین الاقوامی امدادی اداروں  کا مشترکہ پروگرام ہے۔

US AID

WPF

northern area people of pakistan

Tabool ads will show in this div