حکومت تیارہوتومذاکرات کی گاڑی آگےبڑھ سکتی ہے،پروفیسرابراہیم

ویب ایڈیٹر:
پشاور: پروفیسر محمد ابراہیم خان کا کہنا ہے کہ حکومت اگر چاہئے اور مذاکرات میں ہاتھ بٹائے تو یہ سلسلے آگے بڑھ سکتا ہے۔

پشاور میں سماء سے خصوصی گفت گو میں کالعدم تحریک طالبان پاکستان کی رابطہ کمیٹی کے رکن پروفیسر محمد ابراہیم کا کہنا تھا کہ ہماری پوری کوشش ہے کہ دونوں فریقین کے درمیان اعتماد کی فضا برقرار رکھی جائے۔

انہوں نے کہا کہ حکومت مذاکرات میں ہاتھ بٹائے تو بات آگے بڑھ سکتی ہے، ہماری کوشش ہے کہ فوج اور کالعدم طالبان کو ایک میز پر بٹھائیں، جنگ بندی سے متعلق پروفیسر محمد ابراہیم کا کہنا تھا کہ کالعدم طالبان شوریٰ سے جنگ بندی میں توسیع پر بات نہیں ہوئی۔

دوسری جانب جمعیت علمائے اسلام س کے سربراہ مولانا سمیع الحق نے مذاکراتی عمل سے علیحدگی کی دھمکی دے دی، ان کا کہنا ہے کہ اسلام آباد والے چار چار دن فون کا جواب نہیں دیتے ہیں۔ گزشتہ روز پشاور کے نشتر ہال میں قبائلی جرگہ سے خطاب میں مولانا سمیع الحق کا کہنا تھا کہ ہم نہ فوج ہیں نہ طالبان،ہم صرف ثالث ہیں اور امن کی کوشش کررہے ہیں۔

اُدھر کالعدم تحریک طالبان پاکستان کے ترجمان شاہد اللہ شاہد کا کہنا تھا کہ حکومت جان لے، مذاکرات کے ساتھ دھمکی قبول نہیں کریں گے۔ جنگ اور مذاکرات ساتھ نہیں چل سکتے۔ سماء

Video

first test

تبولا

Tabool ads will show in this div

تبولا

Tabool ads will show in this div