حکومت اور طالبان کے براہ راست مذاکرات میں مشکلات درپیش ہیں، پروفیسر ابراہیم

Nov 30, -0001

اسٹاف رپورٹ

سوات : جماعت اسلامی کے صوبائی امیر اور طالبان کمیٹی کے رکن پروفیسر محمد ابراہیم نے کہا ہے کہ حکومت اور طالبان کے براہ راست مذاکرات میں مشکلات درپیش ہیں، 12 سال سے جاری جنگ ختم کرنے کیلئے مذاکراتی عمل میں رکاوٹوں کا سامنا ہے۔

مینگورہ میں جماعت اسلامی کے زیر اہتمام ڈونر کانفرنس کے موقع پر میڈٰیا سے گفتگو کرتے ہوئے پروفیسر محمد ابراہیم کا کہنا تھا کہ حکومت اور طالبان مذاکرات میں سنجیدہ ہیں تاہم بداعتمادی کی فضاء قائم ہے جس کو دور کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ آپریشن سے نہ امن قائم ہوا اور نہ ہی خودکش حملوں سے شریعت نافذ ہوئی، یہ طویل جنگ فوج نے شروع کی تھی، فوج ہی پر اب بھاری ذۢمہ داری عائد ہوتی ہے۔

پروفیسر ابراہیم کا کہنا تھا کہ  انتخابات سے بائیکاٹ کرنیوالے طاہر القادری کے دھرنے میں عمران خان کی شرکت سمجھ سے بالاتر ہے اور ایک سال بعد دھاندلی کیخلاف دھرنا دیکر پی ٹی آئی چیف سیاسی شعور کا ثبوت نہیں دے رہے۔ سماء

Video

palestinian

confidence