سعودی عرب اور ایران کے ساتھ تعلقات میں توازن چاہتے ہیں،سرتاج عزیز

ویب ایڈیٹر:
اسلام آباد : وزیراعظم میاں محمد نواز شریف کا کہنا ہے کہ ہم تمام ہمسایہ ملکوں کے ساتھ اچھے تعلقات چاہتے ہیں، پاکستان دوسری ممالک میں عدم مداخلت کی پالیسی پر عمل پیرا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان خطے اور عالمی سطح پرامن کیلئے کردار ادا کر رہا ہے۔ اس موقع پر سینیر مشیر سرتاج عزیز کا کہنا تھا کہ سعودی عرب اور ایران کے ساتھ تعلقات میں توازن چاہتے ہیں۔

اسلام آباد دفتر خارجہ میں پاکستانی سفیروں کی سہہ کانفرنس جاری ہے، کانفرنس کی سربراہی وزیراعظم میاں محمد نواز شریف کر رہے ہیں۔ اس موقع پر خطاب میں وزیراعظم میاں محمد نواز شریف کا کہنا تھا کہ پاکستان سفیروں کی کانفرنس کا انعقاد خوش آئند اقدام ہے، دوسرے ملکوں کے ساتھ تعلقات میں سفیروں کا کردار اہم ہوتا ہے،ہم ہمسایہ ملکوں کے ساتھ اچھے تعلقات چاہتے ہیں، سفیر ملک کی قیادت کی آنکھیں اور کان ہوتے ہیں۔

خطاب کے دوران وزیراعظم کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان کو مستحکم اور خوشحال بنانے میں سفیروں کا کردار اہم ہے، قائداعظم نے پاکستان کو پُر امن بنانے کا خواب دیکھا تھا، پاکستان خطے اور عالمی سطح پر امن کیلئے کردارادا کر رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ دوسرے ملکوں سے تعلقات میں سفیروں کی آراء کا خیال رکھا جائے گا، درپیش بڑے چیلنجز کا ذکر کرتے ہوئے وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ملک کو در پیش بڑے چیلنجز میں توانائی کا بحران، امن و امان اور معاشی بحالی ہیں، توانائی کی قلت پر قابو پانے کيلئے جامع حکمت عملی پر کام کر رہے ہیں، رواں سال 2600میگاواٹ بجلی قومی گرڈ میں شامل کی جائیگی،جب کہ  اگلے10سال میں بجلی کی پیداوار 21ہزار میگاواٹ تک بڑھانے کا ہدف ہے، جب کہ روپے کی قدر میں اضافہ اور افراط زر کی شرح میں کمی ہوئی ہے۔ مسئلہ کشمیر پر اپنے مؤقف کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ کشمیرسمیت تمام تصفیہ طلب امور بات چیت سے حل کرنا چاہتے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان دوسرے ملکوں میں عدم مداخلت کی پالیسی پرعمل پیرا ہے، اقوام متحدہ کے منشور کے تحت عرب ممالک کے ساتھ تعلقات ہیں، مثبت پالیسیوں سے ملکی معیشت مستحکم ہو رہی ہے۔ سماء

Bhutto

reaction

pacific

channel

Tabool ads will show in this div