سعودی ایران تنازعہ،پاکستان کاپرامن طریقےسےاختلاف ختم کرنےپرزور،اعلامیہ جاری

ریاض / اسلام آباد : وزیراعظم اور سعودی فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز کے درمیان اہم ملاقات کے بعد سعودی ایران تنازعہ پر وزیراعظم کا کہنا ہے کہ دونوں ملک امت مسلمہ کے وسیع تر مفاد میں اختلافات جلد حل کریں۔ پاک سعودی رہنماوں میں مذاکرات کامشترکہ اعلامیہ جاری کردیا گیا ہے۔ وزیراعظم میاں محمد نواز شریف نے سعودی فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز سے ریاض میں ملاقات کی، دونوں رہنماوں نے دوطرفہ تعلقات مزید مستحکم بنانے کی ضرورت پر زور دیا۔ وزیراعظم نے سعودی عرب اور ایران کے درمیان حالیہ کشیدگی پر افسوس کا اظہارکیا اور کہا کہ دونوں ملک امت مسلمہ کے وسیع تر مفاد میں اختلافات جلد پرامن طریقے سے حل کریں، انہوں نے کہا کہ پاکستان او آئی سی کے رکن ملکوں میں اخوت کے فروغ کی پالیسی پر عمل پیرا ہے۔ مزید پڑھیں :   فرماںرواسےملاقات،ایران سعودی تنازعہ خوش اسلوبی سےحل ہو جائیگا،پاکستان سعودی فرمانروا شاہ سلمان نے مصالحت کیلئے پاکستانی قیادت کی کوششوں کو سراہا اور کہا کہ سعودی عرب مسلم ملکوں میں بھائی چارے کا فروغ چاہتا ہے، اس سے قبل اس حوالے سے آرمی چیف جنرل راحیل شریف نے سعودی وزیر دفاع سے ملاقات کی، جس میں اہم امور پر بات چیت کی گئی۔ ذرائع کے مطابق ملاقات میں مشرق وسطیٰ کی صورت حال پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا، آرمی چیف کا کہنا تھا کہ مشرق وسطیٰ کی موجودہ صورت حال کے پیش نظر مسلم امہ کمزور ہو رہی ہے، انہوں نے  دونوں فریقین کو روابط کے چینل کھولنے کی ضرورت پر بھی زور دیا۔ ملاقات کے اختتام پر پاک سعودی رہنماوں میں مذاکرات کامشترکہ اعلامیہ جاری کردیا گیا،  مشترکہ اعلامیے کے مطابق پاکستان نے دو اسلامی ممالک میں کشیدگی پر تشویش کا اظہار کیا ہے، مسلم امہ کیلئے تنازع کا پر امن حل چاہتے ہیں، پاکستان کے عوام سعودی عرب کیلئے خصوصی احترام کا جذبہ رکھتے ہیں، پاکستان دو اسلامی ممالک میں تنازع حل کرانے کیلئے تیار ہے۔ مذاکرات میں دونوں جانب سے معاملات مل کر حل کرنے اور دوطرفہ تعلقات کے فروغ، دفاع، سیکیورٹی اور معیشت میں مزید فروغ پر بھی اتفاق کیا گیا۔ مذاکرات میں دہشت گردی کے خلاف سعودی قیادت میں 34رکنی فوجی اتحاد پر بھی بات کی گئی اور پاکستان نے اس اتحاد کی مکمل حمایت کا اعلان کیا۔ سعودی فرمانروا کا مذاکرات میں کہنا تھا کہ سعودی عرب اسلامی امہ کیلئے کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کرے گا، اس موقع پر سعودی عرب نے پاکستانی کوششوں کی تعریف۔ شاہ سلمان نے مصالحت کیلئے پاکستانی قیادت کی کوششوں کو سراہا اور کہا کہ سعوی عرب مسلم ممالک سے بھائی چارے کا فروغ چاہتا ہے۔ سماء

RAHEEL SHARIF

SAUDI KING

34-member military alliance

iran saudi conflict

Salman Bin Abdul Aziz

Tabool ads will show in this div