ساہیوال میں محبت کی شادی کرنیوالی فرزانہ قتل، شوہر سمیت لڑکی کے 2 رشتہ دار گرفتار

اسٹاف رپورٹ

ساہیوال : ساہیوال میں روایت جیت گئی اور محبت ہار گئی، پسند کی شادی کرنے والی فرزانہ کو طلاق دلوانے کے بعد قتل کردیا گیا، پولیس نے شوہر سمیت لڑکی کے 2 رشتے داروں کو گرفتارکرلیا، چچا کا کہنا ہے کہ فرزانہ کو اس کے دو ماموں اور ایک کزن نے فائرنگ اور کلہاڑی کے وار کرکے قتل کیا۔

جھوٹی انا اور فرسودہ روایات نے ایک بار پھر محبت کا گلا گھونٹ دیا، ساہیوال فرزانہ کا جرم کیا تھا؟، صرف اتنا کہ اس نے اپنی مرضی سے کورٹ میرج کی لیکن محبت کے دشمنوں کو یہ رشتہ ایک آنکھ نہ بھایا۔

گوجرانوالہ میں 9 فروری کو کورٹ میرج کرکے فرزانہ اور شبیر نے ہمیشہ ساتھ نبھانے کا وعدہ کیا لیکن سماج کی دیوار فوراً ہی آڑے آگئی، دو دن بعد دونوں کراچی آرہے تھے کہ اہلخانہ کو دیکھ کر نوبیاہتا جوڑے نے ٹرین سے چھلانگ لگادی۔

پنجاب کے وزیر برائے انسانی حقوق نے جوڑے سے ملاقات کرکے تحفظ کا یقین دلایا، اس دوران فرزانہ کے ورثاء نے شبیر پر اغواء کا مقدمہ درج کرادیا۔

شبیر 22 فروری کو عدالت میں پیش ہوا، جہاں اس نے بتایا کہ پنچایت نے زبردستی طلاق کے کاغذات پر دستخط کرائے ہیں اس کے بعد فزانہ کو دارالامان منتقل کردیا گیا۔

چند دن پہلے فرزانہ کے اہل خانہ اسے دارالامان سے لے گئے اور رات گئے اسے مبینہ طور پر قتل کردیا گیا، واقعے کے بعد پولیس بھی حرکت میں آئی، شبیر اور لڑکی کے رشتے دار شیر عالم  اور نور کو حراست میں لے لیا گیا ہے۔

دوسری جانب لڑکی کے والد کا مؤقف ہے کہ دارالامان سے آنے کے بعد فرزانہ ڈیڑھ ماہ سے ان کے ساتھ تھی۔

لڑکی کے چچا کے مطابق فرزانہ کو اس کے ماموں اللہ دتہ، نور اور کزن فلک شیر ے فائرنگ کرکے قتل کیا، جبکہ کلہاڑی کے وار بھی کئے۔ سماء

Azadi March

guards

rare

squads

stocks

Tabool ads will show in this div