کراچی میں قاتل پھر سرگرم، فائرنگ کرکے 7 افراد سے جینے کا حق چھین لیا گیا

اسٹاف رپورٹ

کراچی : کراچی میں بدامنی پھیلانے والا ہاتھ ایک بار پھر متحرک ہوگیا، نامعلوم قاتلوں نے گولیاں برسا کر 7 افراد کی جان لے لی، میٹھادر میں امام بارہ گاہ کے متولی کو دوست سمیت قتل کردیا گیا، سعید آباد میں پولیس اہلکار گولیوں کا نشانہ بنا۔

کراچی میں موت کا کھیل ایک بار پھر شروع ہوگیا، قاتلوں نے میٹھادر میں امام بارگاہ شیرازی کے متولی شوکت حسین شیرازی کے دفتر میں گھس کر گولیاں برسا دیں۔

فائرنگ سے شوکت حسین شیرازی اور ان کا دوست قیصر جاں بحق ہوگئے،

لاشیں سول اسپتال لائی گئیں تو غم زدہ لواحقین کے ضبط کے بندھن ٹوٹ گئے۔

منگھو پیر کی میانوالی کالونی میں کار پر فائرنگ سے فرحان افضل جان سے گیا، پولیس کے مطابق واقعہ بھتہ خوری کا لگتا ہے، مقتول ماربل فیکٹری کا مالک تھا۔
ادھر سعید آباد یوسف گوٹھ میں قاتلوں نے پولیس اہلکار ارشد کی جان لے لی، پولیس کے مطابق مقتول ارشد علی سیکیورٹی زون میں تعینات تھا، نارتھ کراچی سیکٹر 5 بی میں فائرنگ سے عقیل قادری جان سے گیا۔

عائشہ منزل کے قریب نامعلوم افراد نے ڈرائی کلین کی دکان پر فائرنگ کردی جس سے 53 سالہ ساجد حسین چل بسا، لیاقت آباد میں ڈاکخانہ اسٹاپ کے قریب آٹو پارٹس شاپ پر فائرنگ سے دکان کا مالک 50 سالہ محسن آغا قتل ہوا، واقعے کے بعد علاقے کی صورتحال کشیدہ ہوگئی۔ سماء

burger

Hayatabad

فائرنگ

Tabool ads will show in this div