’عمران خان نے شریف خاندان اورجسٹس فائزکیخلاف کیسز بنانے کاکہا‘

سابق ڈی جی ایف آئی اے بشیر میمن کے انکشافات

سابق ڈی جی ایف آئی اے بشیر میمن نے انکشاف کیا ہے کہ سابق وزیراعظم عمران خان نے شریف فیملی اور لیگی قیادت کیخلاف کیس بنانے کو کہا، جسٹس فائز عیسیٰ کیخلاف کیس بنانے کا کہا گیا تب بھی منع کیا کہ ایف آئی اے انکوائری نہیں کرسکتی۔

سماء کے پروگرام ندیم ملک لائیو میں بات کرتے ہوئے سابق ڈائریکٹر جنرل ایف آئی اے بشیر میمن نے سابق وزیراعظم پر الزام لگایا ہے کہ انہوں نے شریف خاندان اور لیگی قیادت کیخلاف کیسز بنانے کا کہا تھا۔

انہوں نے مزید کہا کہ عمران خان نے شریف فیملی کیخلاف کیس بنانے کو کہا، 10 بار کہا گیا کہ لیگی قیادت پر کیس بناؤ، جسٹس قاضی فائز عیسیٰ پر کیس بنانے کا کہا گیا تو میں نے انکار کردیا۔

بشیر میمن کا مزید کہنا ہے کہ مجھے وزیراعظم ہاؤس بلایا گیا، جہاں اعظم خان اور شہزاد اکبر مجھے سابق وزیراعظم کے پاس لے کر گئے، انہوں نے مجھے احتیاط کے ساتھ نئے کیسز بنانے کا کہا، میں لاعلم تھا کہ وہ کس حوالے سے بات کررہے تھے۔

انہوں نے کہا کہ بعد ازاں شہزاد اکبر اور اعظم خان کے ساتھ بات چیت میں یہ عقدہ کھلا کہ سابق وزیراعظم عمران خان سپریم کورٹ کے جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کیخلاف منی لانڈرنگ کیس بنانے کی بات کررہے تھے۔

سابق ڈی جی ایف آئی کا کہنا ہے کہ میں نے انہیں بتایا کہ ایف آئی اے ایسا کیس نہیں بناسکتی، جس کی وجہ سے سے ہم تینوں کے درمیان بات چیت کشیدہ ماحول میں ختم ہوئی۔

انہوں نے دعویٰ کیا کہ پی ٹی آئی کے رکن قومی اسمبلی عثمان ڈار بھی خواجہ آصف کیخلاف کیس بنانے کیلئے گھر آئے۔ پی ٹی آئی رہنماء نے الزام کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ بشیر میمن کو خواجہ آصف کو گھیرنے کیلئے نہیں کہا۔

IMRAN KHAN

BASHIR MEMON

FORMER DG FIA

Tabool ads will show in this div