شاہدخاقان عباسی کا نیب سمیت کئی قوانین کے خاتمے کااعلان

حکومت میں آنے کے بعدکئی اصلاحات کریں گے، سابق وزیراعظم

شاہد خاقان عباسی نے بڑی تبدیلیوں کا اشارہ دیدیا، کہتے ہیں کہ ہماری حکومت آتے ہی سب سے پہلے نیب کا خاتمہ کریں گے، نیب کے ہوتے ہوئے ملک نہیں چل سکتا۔ انہوں نے پیکا اور الیکشن سے متعلق دیگر متنازع قوانین بھی ختم کرنے کا اعلان کردیا۔

سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ ن کے سینئر رہنماء شاہد خاقان عباسی نے نمائندہ سماء سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ فیصلہ اپوزیشن کرے گی لیکن جلد سے جلد نئے مینڈیٹ کیلئے عوام کے پاس جانا چاہئے، اس سے پہلے اس ملک میں شرافت کی سیاست کو بحال کرنا ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ اصلاحات ضروری ہیں، موجودہ حکومت نے بہت سے غیر قانونی قانون بنائے جن کا عوام سے کوئی تعلق نہیں ہے، پیکا قانون اور الٹی سیدھی الیکشن اصلاحات کی ہوئی ہیں، بغیر مشاورت قانون بنائے گئے، ایک لمبی فہرست ہے، جنہیں ہم نے ختم کرنا ہے۔

شاہد خاقان عباسی کا مزید کہنا تھا کہ نیب کو بھی ختم کرنا ہے، جب تک نیب ہے ملک نہیں چلے گا، احتساب کرنا ہے ایف آئی اے اور ایف بی آر کے قوانین موجود ہیں، اگر احتساب کی نیت ہو تو احتساب ہوجائے گا۔

لیگی رہنماء نے کہا کہ ن کے کیسز چلتے رہیں گے، عدالت میں ایک شخص ملا جو 7 سال سے جیل میں ہے، جج نے پوچھا اس کیس میں سزا کتنی ہے تو بتایا کہ 6 سال، یہ نیب کے ظلم ہیں، اس ظلم کا حساب نیب کے افسران اور چیئرمینوں کو دینا پڑے گا۔

ایک سوال کے جواب میں شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ ہم نے ہمیشہ عوام کے نمائندے اور پارلیمان کے اراکین کے ساتھ مشاورت سے پارلیمان کو چلایا ہے، 2018ء میں حکومت کی آخری 9 دن میں دو تہائی اکثریت سے قانون منظور ہوا، یہ اس وقت ہوتا ہے جب آپ کے دوسروں کے ساتھ تعلقات ہوں، شہباز شریف بھی سب کے ساتھ ہاتھ ملائیں گے۔

PM IMRAN KHAN

Tabool ads will show in this div